رسائی کے لنکس

logo-print

کرونا سے دنیا بھر میں 260 نرسیں ہلاک، طبی عملے کے 90 ہزار افراد متاثر: رپورٹ


(فائل فوٹو)

انٹرنیشنل کونسل فار نرسز (آئی سی این) جنیوا نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ دنیا بھر میں کرونا وائرس کے باعث 260 نرسیں ہلاک جب کہ طبی عملے کے 90 ہزار سے زائد اراکین متاثر ہو چکے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ حکومتوں کی جانب سے درست اعداد و شمار فراہم نہ کرنا، حفاظتی سامان کی کمی اور دیگر وجوہات کے باعث وائرس سے متاثرہ طبی عملے کی تعداد اس سے دگنا بھی ہو سکتی ہے۔

خبر رساں ادارے 'رائٹرز' کے مطابق 'آئی سی این' کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہاورڈ کیٹن کا کہنا ہے کہ حکومتیں وائرس سے متاثر ہونے والے طبی عملے کے مستند اعداد و شمار فراہم نہیں کر رہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ یہ ڈیٹا دنیا کے 30 ملکوں سے جمع کیے جانے والے اعداد و شمار پر مشتمل ہے۔ لہذٰا وائرس کے باعث ہلاک یا متاثر ہونے والے افراد کا جامع ڈیٹا مرتب کرنے کی ضرورت ہے۔

ہاورڈ کیٹن کا کہنا ہے کہ اُن کے ادارے کے ساتھ دنیا کے 130 ملکوں میں دو کروڑ سے زائد نرسز رجسٹرڈ ہیں۔ لہذٰا گمان یہی ہے کہ وائرس سے متاثر ہونے والے طبی عملے کی تعداد کہیں زیادہ ہے۔

ہاورڈ کیٹن کے بقول دنیا بھر میں 35 لاکھ سے زائد افراد کرونا کا شکار ہو چکے ہیں۔ اگر طبی عملے کے چھ فی صد اراکین بھی متاثر ہوں تو متاثرہ طبی عملے کی تعداد دو لاکھ سے زائد ہو سکتی ہے۔

ہاورڈ کا یہ بھی کہنا ہے کہ اصل مسئلہ یہ ہے کہ حکومتیں باقاعدگی سے تمام معلومات نہ تو اکھٹا کررہی ہیں اور نہ ہی انہیں رپورٹ کیا جا رہا ہے۔ لہذٰا اس بات کے امکانات بہت زیادہ ہیں کہ کووڈ-19 سے متاثرہ کارکنوں کی تعداد اور ہلاکتیں تخمینے سے بھی زیادہ ہوں۔

دوسری جانب عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کا کہنا ہے کہ دنیا بھر کے 194 رکن ممالک متاثرہ کارکنوں کے جامع اعداد و شمار فراہم نہیں کر رہے، جس کی وجہ ان کا بحران سے بری طرح متاثر ہونا ہے۔

ڈبلیو ایچ او نے 11 اپریل کو طبی عملے کے لگ بھگ 22 ہزار اراکین کے متاثر ہونے کی تصدیق کی تھی۔ لیکن 'آئی سی این' کا کہنا ہے کہ اُنہیں اب اندازہ ہوا کہ یہ اعداد و شمار اصل تعداد سے کہیں کم ہیں۔

آئی سی این کے جاری کردہ بیان کے مطابق مثاثرہ کارکنوں میں انفیکشن کی شرح اور اموات کے اعداد و شمار کا ریکارڈ نہ ہونا نرسوں اور ان کے مریضوں کو مزید خطرے میں ڈالنے کے مترادف ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG