رسائی کے لنکس

logo-print

ہنزہ جھیل سے پانی کا اخراج جاری


ہنزہ جھیل سے پانی کا اخراج جاری

آفات سے نمٹنے کے سرکاری ادارے نیشنل ڈیزاسٹرمینجمنٹ اتھارٹی یا این ڈی ایم اے کے چیئرمین ندیم احمد نے وا ئس آف امریکہ کو بتایا ہے وادی ہنزہ میں عطا آباد کے علاقے میں پہاڑی تودے گرنے سے بننے والی مصنوعی جھیل پر بنائے گئے سپل وے سے پانی کا اخراج شروع ہو گیا ہے اور ابتدائی طور پر پانی کا اخراج کم ہے جس میں گذرتے وقت کے ساتھ تیزی آئے گی۔

اُنھوں نے بتایا حکام بدلتی صورت کا مسلسل جائزہ لے رہے ہیں اور آئندہ 24 سے 36 گھنٹے انتہائی نازک ہیں ۔

سیلابی ریلے کے باعث کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے نہ صرف نشیبی بلکہ بالائی علاقوں میں رہنے والوں کوبھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کناروں پر نہ آئیں۔ حکام کے مطابق بڑ ی تعداد میں خوراک اور ادویات بھی علاقے میں پہنچا دی گئی ہیں۔

فوج کے شعبہ انجینئرنگ کے حکام پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ سپل وے کی تعمیر کے بعد ممکنہ نقصانات کے خطرات کو 50فیصد تک کم کردیا گیا ہے۔

خیا ل رہے کہ 4 جنوری کو عطاآباد میں لینڈ سلائیڈنگ نے دریا ہنزہ کا راستہ روک دیا تھا جس کی وجہ اس علاقے میں ایک مصنوعی جھیل بن گئی اور شاہراہ قراہ قرم کا 22 کلومیڑ حصہ بھی اس میں ڈوب گیا ہے۔

وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے علاقے کا دورہ کرنے کے بعد رواں ہفتے ہنزہ جھیل کے متاثرہ خاندانوں کے لیے امدادی پیکج کا اعلان کیا ہے جس کے تحت ان خاندانوں کو لاکھوں روپے کی نقدامدادکے علاوہ خوراک اور دیگر سہولیات فراہم کی جائیں گی۔

XS
SM
MD
LG