رسائی کے لنکس

logo-print

امریکہ میں غیر قانونی انڈونیشی عیسائیوں کو سیاسی پناہ دلانے کا بل


ایک امریکی سینیٹر نے ایک بل پیش کیا ہے جس میں امریکہ میں آباد انڈونیشی عیسائیوں کواپنے وطن میں مذہبی طورپر ہراساں کیے جانے کی بنیادوں پر سیاسی پناہ کی درخواست کا اہل قرار دینے کے لیے کہا گیا ہے۔

سینیٹر فرینک لیٹن برگ کی جانب سے پیش کردہ اس بل کا مقصد ان ہزاروں انڈونیشی عیسائیوں کی مدد کرنا ہے جن میں سے اکثر 1996ء اور 2003ء کے دوران سیاحتی ویزے پر امریکہ آئے تھے۔

انڈونیشیا میں اس عرصے کے دوران مذہبی بنیاد وں پر ہراساں کرنے کے واقعات میں نمایاں اضافہ ہواتھا اور انتہاپسندوں نے ایک ہزار سے زیادہ گرجا گھروں کو تباہ کردیاتھا۔

انڈونیشی تارکین وطن کی اکثریت نیوجرسی، نیویارک اور نیو ہمپشائر کی ریاستوں میں مقیم ہیں اور ان میں سے اکثر کو سیاسی پناہ کی درخواست کی تاریخیں گذر جانے کے بعد امریکہ سے نکالنے جانے کے خطرے کا سامنا ہے۔

سینیٹر لیٹن برگ نے وائس آف امریکہ کو بتایا کہ ان کے اس اقدام کا مقصد غیر قانونی انڈونیشی عیسائیوں کو ملک سے نکالنے کے عمل اتنی مدت کے لیے تک التوا میں ڈالنا ہے جس میں مذکورہ افراد سیاسی پناہ کے لیے درخواست دے سکیں اور ان کی درخواستوں پر کارروائی شروع ہوجائے۔

XS
SM
MD
LG