رسائی کے لنکس

logo-print

انڈونیشی پاپ سٹار کو قابل اعتراض ویڈیو پر ساڑھے تین سال قید کی سزا


انڈونیشی پاپ سٹار کو قابل اعتراض ویڈیو پر ساڑھے تین سال قید کی سزا

انڈونیشیا کی ایک عدالت نے جنوب مشرقی ایشیا کے ایک جانے پہچانے راک سٹار کو تین سال سے زیادہ عرصہ پہلے انٹرنیٹ پر اس کی ایک ویڈیو ٹیپ منظر عام پر آنے کے بعد، جس میں اسے ٹیلی ویژن کی دو شخصیات کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں دکھایا گیا تھا، سزا سنائی ہے۔

نظرل اریل، جن کی عمر 29 سال ہے، راک بینڈ پیٹرپین کے مرکزی گلوکار ہیں۔ عدالت نے انہیں فحش مواد کے انسداد کے قوانین کے تحت ساڑھے تین سال قید کی سزا سنائی۔

کمرہ عدالت کے اندر اور باہر موجود نظرل کے شیدائیوں نے فیصلے کے خلاف اپنی برہمی کا اظہار کیا۔

گلوکار کا کہناہے کہ مذکورہ ویڈیو کو چرا کر، اس کے علم میں لائے بغیر انٹرنیٹ پر شائع کیا گیاتھا۔ لیکن سخت موقف کے حامی مسلمانوں نے کہاہے کہ ان کی ان حرکتوں سے قومی اخلاقیات کو نقصان پہنچا ہے۔

XS
SM
MD
LG