رسائی کے لنکس

logo-print

ایران میں پہلےجوہری پاور پلانٹ کا افتتاح


ہفتے کو ایران میں انجنئیروں نے ملک کے پہلے نیوکلیئر پاور پلانٹ میں ایندھن بھرنا شروع کر دیا ہے۔

یہ تنصیب جنوبی قصبے بوشہر میں واقع ہے۔

ایرانی ٹیلی ویژن نے وِڈیو دکھائی ہے جِس میں ایرانی اور روسی عہدے داروں کو سفید رنگ کےلیبارٹری کوٹ پہنے تنصیب کا دورہ کرتے دکھایا گیا ہے، جوپلانٹ کےافتتاح کی تقریب کا حصہ ہے۔ روس نے اِس تنصیب کی تعمیرمیں مدد کی ہے اور ری ایکٹر کے لیے ایندھن مہیا کر رہا ہے۔

تنصیب کے سائٹ پر ہونے والی نیوز کانفرنس میں ایران کے جوہری توانائی کے سربراہ علی اکبر صالحے نے تعاون کرنے پر روس کا شکریہ ادا کیا۔ اُنھوں نے یہ بھی کہا کہ مغربی اقوام کی طرف سے دباؤ، پابندیوں اور مشکلات کے باوجود ایران ایسے کام کا آغاز کر رہا ہے، جو اُن کے بقول، ملک کی پُر امن جوہری سرگرمیوں کی سب سے بڑی علامت کا درجہ رکھتاہے۔

ایران کے ‘پریس ٹی وی’نے کہا ہے کہ پلانٹ کے ری ایکٹر میں ایندھن کی 163سلاخوں کی منتقلی کا کام پانچ ستمبر کو مکمل ہو جائے گا۔ خبروں کے ادارے کا کہنا ہے کہ ایرانی عہدے داروں کو توقع ہے کہ آئندہ دو سے تین ماہ کےاندر جوہری توانائی سے پیدا ہونے والی بجلی استعمال کی جاسکے گی۔

XS
SM
MD
LG