رسائی کے لنکس

logo-print

غزہ امدادلے جانے والے یہودی گروپ کو اسرائیل نے روک لیا


غزہ امدادی سامان لے کرجانے والے یہودی گروپ کے ارکان کشتی پر سوار ہیں

اسرائیلی بحریہ نے منگل کے روز امدادی سامان غزہ لے جانے والے ایک یہودی گروپ کی کشتی کو روک لیا ہے۔

بحری سفرکے منتظمین کا کہنا ہے کہ غزہ کے ساحل سے کئی کلومیٹر دور بحری فوجیوں نے ان کی کشتی پر سوار ہوکر انھیں زبردستی جنوبی اسرائیلی بندرگاہ اشدود کی طرف جانے کو کہا۔ اس دوران کسی ہنگامہ آرائی کی اطلاعات موصول نہیں ہوئیں۔

”فلسطینیوں کے لیے انصاف “نامی ایک برطانوی یہودی گروپ نے اس سفر کا اہتمام کیا تھا اور اتوار کو شمالی قبرص سے روانہ ہونے والی کشتی پر عملے کے ارکان سمیت نو افراد سوار تھے۔

گروپ کا کہنا تھا کہ وہ طبی سامان، بچوں کے کھلونے اور دیگر اشیاء غزہ پہنچائے گا۔

گروپ کے ترجمان رچرڈ کوپر کا کہنا تھا کشتی کا یہ سفر فلسطینی علاقوں پر اسرائیلی قبضے اور غزہ کے محاصرے کے خلاف ”علامتی “احتجاج ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ”اسرائیلی حکومت کی پالیسیوں کو تمام یہودیوں کی حمایت حاصل نہیں ہے“۔

رواں سال مئی میں اسرائیل کو اس وقت دنیا بھر میں سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا جب فلسطینیوں کے حامیوں کے ایک امدادی بحری بیڑے ”فریڈم فلوٹیلا“ پر اسرائیلی کمانڈوز کی فائرنگ سے نو افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

XS
SM
MD
LG