رسائی کے لنکس

logo-print

غزہ پر اسرائیلی حملے کے خلاف اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مصنف اسرائیل جائیں گے


غزہ پر اسرائیلی حملے کے خلاف اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مصنف اسرائیل جائیں گے

اسرائیل کے وزیر داخلہ نے کہاہے کہ جنوبی افریقہ کے ایک جج رچرڈ گولڈ سٹون نے اسرائیل کا دورہ کرنے کی ان کی دعوت قبول کرلی ہے اور یہ وعدہ کیا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کے لیے اپنی اس رپورٹ کی منسوخی کے لیے کام کریں گے جس میں اسرائیل پر الزام لگایا گیا تھا کہ اس کے فوجی دستوں نے دو سال قبل غزہ کی پٹی پر حملے کے دوران فلسطینیوں شہریوں کو جان بوجھ کر اپنا نشانہ بنایا تھا۔

اسرائیلی وزیر داخلہ ایلی یاہو یی شائی نے کہاکہ انہوں نے پیر کے روز گولڈ سٹون کو فون پر ایک اخبارمیں شائع ہونے والے ان کے تبصروں پر شکریہ ادا کیا جس میں انہوں نے کہاتھا کہ بظاہر ایسا دکھائی دیتا ہے کہ ان کے الزامات درست نہیں تھے۔

گولڈ سٹون نے اپنے تبصروں میں کہا ہےاگراس وقت انہیں ان چیزوں کا علم ہوتا ، جس کا انہیں اب ہے ، تو ان کی رپورٹ مختلف ہوسکتی تھی۔ تاہم انہوں نے کہا کہ حقائق کا کھوج لگانے کے لیے ان کی ٹیم بہتر پوزیشن میں نہیں تھی کیونکہ اسرائیل نے تعاون کرنے سے انکار کردیاتھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان کا خیال ہے کہ انہیں تحقیقات کا حکم دینے والے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے کمشن کی اسرائیل کے خلاف سوچ کی ایک تاریخ موجود ہے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ گولڈ سٹون کے اسرائیل کے دورے میں جنوبی حصے کی آبادیاں بھی شامل ہیں جہاں کئی برسوں سے غزہ کی پٹی کے فلسطینی عسکریت پسند ان پر راکٹ داغ رہے ہیں۔

اس ہفتے کے شروع میں اسرائیل نے اقوام متحدہ گولڈ سٹون کی رپورٹ واپس لینے کا مطالبہ کیاتھا۔

گولڈ سٹون کی رپورٹ میں یہ الزام بھی لگایا گیا ہے کہ حماس کی فورسز ، جن کے پاس غزہ کا کنٹرول ہے، اسرائیلی شہریوں پر سوچے سمجھے حملے کرکے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی مرتکب ہوئی ہیں۔

غزہ کی پٹی پر اسرائیلی حملے کے نتیجے میں تقریباً 1400 افراد ہلاک ہوئے تھے جن میں اکثریت فلسطینیوں کی تھی۔ اسرائیل نے یہ حملہ فلسطینی عسکریت پسندوں کی جانب سے اسرائیلی علاقوں پر راکٹ اور مارٹر گولوں کے حملے رکوانے کے لیے کیاتھا۔

XS
SM
MD
LG