رسائی کے لنکس

logo-print

بحیرہ روم میں ایک ہزار تارکین وطن کو بچالیا گیا


اٹلی کے ساحلی محافظوں کا کہنا ہے کہ تارکین وطن کو ایک امدادی کشتی میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

اٹلی کے بحری محافظوں نے جمعہ کو کہا کہ انہوں نے بحیرہ روم میں تقریباً ایک ہزار تارکین وطن کو بچا لیا ہے جب کہ ایک شخص مردہ حالت میں ملا۔

عہدیداروں کا کہنا ہے یہ تارکین نو مختلف کشتیوں میں سوار تھے ان میں سے چھ ربر کی جب کہ تین لکڑی کی بنی ہوئی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ مرنے والے شخص کی لاش ایک ربر کی کشتی سے ملی ہے۔

اٹلی کے ساحلی محافظوں کا کہنا ہے کہ تارکین وطن کو ایک امدادی کشتی میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

افریقہ اور مشرقی وسطیٰ کے ملکوں سے تعلق رکھنے والے تارکین وطن لیبیا کے راستے بحیرہ روم کو پار کر کے اٹلی پہنچنے کی کوشش میں انسانی اسمگلروں کو رقم ادا کرتے ہیں۔

گزشتہ سال ایک ریکارڈ تعداد میں ایک لاکھ 80 ہزار تارکین وطن اٹلی میں داخل ہوئے۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال پانچ ہزار سے زائد افراد بحیرہ روم کو پار کرنے کی کوشش میں ہلاک ہو گئے۔

XS
SM
MD
LG