رسائی کے لنکس

logo-print

سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر خودکش حملے میں کم ازکم 18 ہلاک


سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر خودکش حملے میں کم ازکم 18 ہلاک

پشاور سے ملحقہ خیبر ایجنسی کے علاقے جمرود میں بدھ کی شام سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر ہونے والے خودکش حملے میں کم ازکم 18 افراد ہلاک ہوگئے ہیں، جن میں کم از کم سات پولیس اہل کار شامل ہیں۔

دھماکا اس قدر شدید تھا کہ زیادہ تر ہلاکتیں موقع پر ہی ہوگئیں اور گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

بتایا جاتا ہے کہ خیبر خاصہ دار فورس کا مقامی لائن آفیسر زرمد خان گذشتہ کئی ماہ سے دہشت گردوں کے نشانے پر تھا۔ زخمیوں کو مقامی ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

دریں اثنا بدھ کے روز پشاور کے دورے کے موقع پر وفاقی وزیرداخلہ رحمن ملک نے صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے کہا کہ حکومت طالبان کے ساتھ کسی قسم کے مذاکرات نہیں کررہی۔

تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ حکیم اللہ محسود کی 14 جنوری کو وزیرستان میں ایک ڈورن حملے میں ہلاکت کے بارے میں رحمن ملک نے کہا کہ ان کے پاس ایسی اطلاعات ہیں کہ وہ مر چکا ہے تاہم ان اطلاعات کی تصدیق انھیں حاصل نہیں۔

XS
SM
MD
LG