رسائی کے لنکس

logo-print

مائیکل جیکسن کے معالج ڈاکٹر مرے کو چار سال قید کی سزا


مائیکل جیکسن کے معالج ڈاکٹر مرے کو چار سال قید کی سزا

سالہ ڈاکٹر مرے فیصلے کے وقت عدالت میں موجود تھے تاہم ان کے چہرے پر کسی بھی قسم کے کوئی تاثرات نہیں تھے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے بے ہوشی کی دوا کو بطور نیند آور ادویہ مائیکل جیکسن کو استعمال کرنے کی اجازت دی ۔ اسی دوا کی زائد از ضرورت خوراک مائیکل جیکسن کو موت کی آغوش میں لے گئی۔

آنجہانی اور ’کنگ آف پاپ‘ کا لقب رکھنے والے گلوکار مائیکل جیکسن کے معالج ڈاکٹر کونارڈ مرے کو چار سال قید کی سزا ہوگئی ہے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے مائیکل جیکسن کے علاج میں مجرمانہ غفلت برتی ۔ ڈاکٹر کونارڈ مرے کو تین ہفتے قبل لاس اینجلس کی عدالت نے مجرم ٹھہرایا تھا تاہم سزا کا تعین ہونا باقی تھا۔۔اور بلاخر منگل کو یہ سزا بھی سنا دی گئی۔

برطانوی خبر رساں ادارے رائٹرز کا کہنا ہے ایک سال سے زائد مدت تک چلنے والے اس مقدمے کافیصلہ سناتے ہوئے جج مائیکل پیسٹر کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر مرے ناصرف اپنے پیشہ ورانہ فرائض سے غفلت برتنے کے مرتکب ہیں بلکہ وہ مریضوں کی جانب سے ڈاکٹروں پر کیے جانیوالے اعتماد کو ٹھیس پہنچانے کے قصور وار ہیں ۔ ان کی غفلت کے سبب ہی مائیکل جیکسن کی موت ہوئی۔

58 سالہ ڈاکٹر مرے فیصلے کے وقت عدالت میں موجود تھے تاہم ان کے چہرے پر کسی بھی قسم کے کوئی تاثرات نہیں تھے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے بے ہوشی کی دوا کو بطور نیند آور ادویہ مائیکل جیکسن کو استعمال کرنے کی اجازت دی ۔ اسی دوا کی زائد از ضرورت خوراک مائیکل جیکسن کو موت کی آغوش میں لے گئی۔مائیکل جیکسن دو سال قبل 25جون 2009ء کو انتقال کرگئے تھے ۔

ڈاکٹر مرے ڈیڑھ لاکھ ڈالر ماہانہ تنخواہ کے عوض مائیکل جیکسن کے علاج معالجے پر مامور تھے۔ منگل کو جب اس مقدمے کا فیصلہ سنایا جارہا تھا عدالت میں مائیکل جیکسن کے اہل خانہ بھی موجود تھے جن میں ان کی والدہ کیتھرائن سرفہرست تھیں ۔

XS
SM
MD
LG