رسائی کے لنکس

logo-print

شام اور لبنان کے سرحدی علاقوں میں داعش کے خلاف کارروائی


فائل فوٹو

لبنان میں امریکی حمایت یافتہ فوج نے ہفتہ کو اعلان کیا کہ وہ شام کی سرحد سے ملحقہ علاقوں کو شدت پسند تنظیم داعش سے پاک کرنے کے لیے فوجی کارروائی کا آغاز کر رہی ہے۔

یہاں موجود شدت پسندوں سے قریبی علاقوں اور دیہاتوں کو انتہائی خطرہ رہا ہے اور ایک عرصے سے یہ کارروائی شروع کرنے کی بات کی جا رہی تھی۔

ادھر شام کی جانب لبنانی حزب اللہ گروپ اور شامی مسلح افواج نے بھی سرحد کے پاس قلمون پہاڑی سلسلے سے داعش کو مار بھگانے کے لیے کارروائی کے آغاز کا اعلان کر رکھا ہے۔

گو کہ لبنانی حکام مُصر ہیں کہ وہ شامی صدر بشارالاسد کی حکومت کے ساتھ رابطے میں نہیں لیکن ان کارروائیوں میں باہمی تعاون بھی درکار ہوگا۔ حزب اللہ اسد کی فورسز کے شانہ بشانہ 2013ء سے برسرپیکار ہیں۔

کارروائی کے آغاز کے اعلانات ہفتہ کو لبنانی کمانڈر جوزیف عون اور شامی حکومت سے منسلک مرکزی عسکری میڈیا نے ٹوئٹر پر کیے۔

ان علاقوں میں انتہا پسندوں کی موجود قریبی علاقوں اور دیہاتوں کے لیے انتہائی تکلیف کا باعث رہی ہیں جنہیں گولہ باری کے علاوہ اغوا برائے تاوان کی وارداتوں کا سامنا چلا بھی رہا ہے۔

فوج کی طرف سے عسکریت پسندوں کے خلاف گزشتہ سال سے شروع کی گئی کارروائیوں میں آہستہ خرامی سے کامیابی بھی حاصل ہو رہی ہیں اور گزشتہ ہفتے ہیں ایک پہاڑی سلسلے کو بھی شدت پسندوں سے پاک کر دیا گیا تھا۔

لبنان کے سیاستدانوں کا کہنا ہے کہ داعش شام اور لبنان کے درمیان تقریباً تین سو مربع کلومیٹر کے علاقے پر اثرورسوخ رکھتے ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG