رسائی کے لنکس

logo-print

ماسکو میں خودکُش حملہ آوروں میں ایک 17 سالہ بیوہ تھی


ایک ممتاز روسی اخبار نے اطلاع دی ہے کہ اس ہفتے ماسکو کے زمیں دوز ریلوے کے نطام میں جن دو خود کُش حملہ آور عورتوں نے 39 لوگوں کو ہلاک کیا تھا اُن میں سے ایک عسکریت پسند مسلمان کی 17 سالہ بیوہ تھی۔

اخبار ‘کومر سینٹ’ نے ایک ایسی تصویر شایع کی ہے جس میں جنّت عبدالّرحمانوا بندوق اپنے مرحوم شوہر کے برابر کھڑی ہوئى دکھائى دیتی ہے ۔ اُس کے شوہر کو روسی فوجوں نے دسمبر میں ہلاک کردیا تھا۔

اخبار نے کہا ہے کہ اِس لڑکی کو داغستان کے شمالی قفقاز کے صوبے کے حکام نے شناخت کرلیا ہے جہاں سے وہ ماسکو پہنچی تھی۔

کومر سَینٹ نی اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ حکام نے ابھی تک دوسری خود کُش حملہ آور کو باضابطہ طور پر شناخت نہیں کیا ۔ لیکن باور کیا جاتا ہے کہ وہ ایک عسکریت پسند چیچن کی 20سالہ بیوہ مرخا اُستراخانوا تھی۔

روسی صدر دمتری میدوی دیف نے ماسکو کے زمیں دوز ریلوے سٹیشنوں پر حملوں اور پھر داغستان میں بموں کے اُن خود کُش حملوں کے بعد جن میں 12افراد ہلاک ہوئے تھے، دہشت گردی کے خلاف زیادہ سخت قوانین کے مطالبہ کیا ہے۔

روس کی خبر رساں ایجنسیوں نے جمعے کے روز مسٹر مید وی دیف کے حوالے سے کہا ہے کہ جو بھی دہشت گردوں کی مدد کرتا ہے خواہ وہ‘ اپنے لیے شوربا ہی کیوں نہ بناتا ہو یا اپنے کپڑے ہی کیوں نہ دھوتا ہو’ اُسے ایک مجرم سمجھنا چاہئیے۔

XS
SM
MD
LG