رسائی کے لنکس

logo-print

سلمان صوفی مدر ٹریسا ایوارڈ کے لیے نامزد


سلمان صوفی

وزیر اعلیٰ پنجاب کے اسٹریٹیجک ریفارم یونٹ کے سابق ڈائریکٹر جنرل سلمان صوفی کو خواتین کے حقوق اور انہیں بااختیار بنانے کے لیے ان کے کام کے اعتراف میں بھارت میں ’مدرٹریسا ایواڈ برائے 2018‘ کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔

مدر ٹریسا ایوارڈ دینے کی تقریب 21 اکتوبر کو ممبئی میں منعقد ہو گی۔

اس سے قبل انسانی خدمات پر یہ اہم ایوارڈ دلائی لامہ، ملالہ یوسف زئی، پرنیانکا چوپڑا، مہاترمحمد، بلقیس ایدھی، نیرجا بھنوت اور عبداللہ بن زیاد بن نہان کو مل چکا ہے۔

اس سال سلمان صوفی کے ساتھ جن دوسری شخصیات کو ایوارڈ دیا جا رہا ہے ان میں نوبیل انعام یافتہ شریں عبادی، نوبیل انعام یافتہ توکل کرمان، رولا غنی، یونمی پارک، ایزک وسیلی، خواتین کے حقوق کے لیے کام کرنے والی نوبیل انعام یافتہ یزیدی خاتون نادیہ مراد اور ڈاکٹر ناشوا الروانی شامل ہیں۔

سلمان صوفی نے کہا ہے کہ وہ اپنا یہ ایوارڈ پاکستان کی ان خواتین کے نام کرتے ہیں جنہیں تشدد اور ہراساں کیے جانے کے واقعات کا سامنا کرنا پڑا اور انہوں نے اس توقع کا اظہار کیا کہ وہ انہیں انصاف دلانے کے لیے کام کرتے رہیں گے۔

سلمان صوفی جنہیں پی ٹی آئی کی حکومت نے اپنے عہدے سے الگ کر دیا تھا، یہ بھی کہا کہ اب ان منصوبوں کو فنڈنگ نہیں ملی ہے۔ جسکی وجہ سے یہ پروگرامز بند ہونے کا اندیشہ ہے۔ اس سلسلے میں حکومت کا نقتہ نظر جاننے کیلئے منسٹر آف ہیومن رائٹس شیریں مزاری اور پنجاب کی منسٹر آف وومن ڈیوییلپمینٹ آشفہ ریاض فاتیانہ سے رابطہ کیا گیا لیکن دونوں جانب سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG