رسائی کے لنکس

logo-print

پاکستان کے نئے ایئر چیف مجاہد انور خان نے کمان سنبھال لی


سبدوش ہونے والے ایئر چیف سہیل امان نئے ایئر چیف مجاہد انور خان کو علامتی شمشیر سونپ رہے ہیں

پاک فضائیہ کے پندرہویں سربراہ ائیرچیف مارشل مجاہد انور خان نے ایئر ہیڈ کوارٹر اسلام آباد میں چینج آف کمانڈ کی پروقار تقریب میں پاک فضائیہ کی کمان سنبھال لی ۔ جے ایف تھنڈر سکواڈرن نے سابق ایئر چیف سہیل امان کو سلامی دی ۔

سبکدوش ہونے والے ایئر چیف سہیل امان نے نئے ایئر چیف مجاہد انور خان کو بیجز لگائے اور مصافحہ کیا ۔ اُنہوں نے ایئر چیف مجاہد انور خان کو کمان کی علامتی شمشیر بھی سونپی ۔

اس سے قبل ائیر چیف سہیل امان کے ایئر ہیڈ کوارٹر اسلام آباد پہنچنے پر ایئر چیف مجاہد انور خان نے ان کا استقبال کیا۔

ایئرچیف سہیل امان کو سلامی دی گئی جبکہ سہیل امان نے گارڈ آف آنر کا معائنہ بھی کیا۔ ایئر ہیڈ کوارٹر اسلام آباد میں چینج آف کمانڈ کی تقریب میں اعلی سول اور فوجی افسران نے شرکت کی ۔

ایئر چیف مارشل سہیل امان ایئر مارشل مجاہد انور خان کو ایئر چیف کے بیج لگا رہے ہیں
ایئر چیف مارشل سہیل امان ایئر مارشل مجاہد انور خان کو ایئر چیف کے بیج لگا رہے ہیں

ائیر مارشل مجاہد انور خان سنیارٹی میں دوسرے نمبر پر تھے۔ان سے پہلے پاک فضائیہ کے موجودہ وائس چیف آف ائیرسٹاف ائیرمارشل فاروق حبیب تھے۔ 23 دسمبر 1962 کو جنم لینے والے ائیرمارشل مجاہد انور خان نے دسمبر 1983 میں پاکستان ائیر فورس کی جی ڈی پی برانچ میں کمیشن حاصل کیا ۔ پی اے ایف اکیڈمی سے اعزازی شمشیر ، بیسٹ پائلٹ ٹرافی اور چیئر مین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی گولڈ میڈل کے حقدار قرار پائے ۔

ائیرچیف مجاہدانورخان کمبیٹ کمانڈ اسکول ، کمانڈ اینڈ سٹاف کالج اردن ، ائیروار کالج فیصل اورنیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد سے فارغ التحصیل ہیں ۔ اپنے شاندار کیرئیر کے دوران ، ایک فائٹرسکواڈرن ، ایک ٹیکٹیکل اٹیک ونگ اور ایف 16 کی دوائیر بیسسز کی کمانڈ کر چکے ہیں۔

ائیر مارشل مجاہد انور خان اس وقت ڈپٹی چیف آف دی ائیر سٹاف (سپورٹ ) اور ڈائریکٹر جنرل ائیر فورس سٹریٹیجک کمانڈ کے عہدوں پر فائز ہیں ۔ وہ اس سے پہلے چیف آف دی ائیرسٹاف کے پرسنل سٹاف آفیسر، اسسٹنٹ چیف آف دی ائیرسٹاف (آپریشنز) اور ڈائریکٹر جنرل سی فور آئی کے طور پر بھی خدمات انجام دے چکےہیں ۔ ائیر مارشل مجاہد انور خان کو پاک فضائیہ میں شاندار خدمات کے اعتراف میں ہلال امتیاز (ملٹری) ، ستارۂ امتیاز (ملٹری) اور تمغہ امتیاز (ملٹری) سے بھی نوازا گیا۔

سبکدوش ہونے والے ائیرچیف سہیل امان نے کہا کہ دنیا کی بہترین فضائیہ کا سربراہ ہونے سے بڑھ کرمیرے لئے عزت کااور کوئی مقام نہیں۔

انہوں نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ میں اپنے پیچھے پیشہ ورانہ مہارت کے حامل افراد پر مشتمل انتہائی تجربہ کار فضائیہ چھوڑ کر جا رہا ہوں جو قوم کی امنگوں پر پورا اترتے ہوئے ہر لمحہ فضائی سرحدوں کی حفاظت کے لئے تیار ہے ۔ میرے تین سالہ دور میں پاک فضائیہ کو غیر ریاستی عناصر اور انتہا پسندوں کے ساتھ جنگ کر کے ملک میں امن قائم کرنے کے چیلنج کا سامنا تھا اور پاک فضائیہ نے یہ سنگ میل بڑی کامیابی سے حاصل کیا۔ پاک فضائیہ کا ائیر پاور سینٹر آف ایکسی لینس پاک فضائیہ کی آپریشنل تیاریوں اور دوست ممالک کے ساتھ بہترین تعلقات کے فروغ میں معاون ثابت ہو گا۔ حالیہ برسوں میں ملکی دفاع مزید مضبوط ہوا ہے۔ انہوں نے کہا پاک فضائیہ نے ملکی دفاع میں ہمیشہ کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ پاک فضائیہ نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں بھی اہم کردار ادا کیا۔ پاک فضائیہ کو جدید تقاضوں کے مطابق لیس کیا جا رہا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG