رسائی کے لنکس

logo-print

صدر اوباما یہ کہہ کر سعودی عرب پر تنقید کرتے ہیں کہ وہ داعش کے خلاف لڑائی میں درکار تعانو فراہم نہیں کر رہا

امریکہ کے صدر براک اوباما بدھ کو سعودی عرب پہنچے ہیں جہاں وہ سعودی فرمانروا شاہ سلمان سے ملاقات میں توقعہے کہ علاقائی امور سمیت ایران اور سعودی عرب کی مخاصمت، یمن تنازع اور شدت پسند گروپ داعش کے خلاف کوششوں پر تبادلہ خیال کریں گے۔

امریکہ اور سعودی عرب دیرینہ اتحادی ہیں لیکن حالیہ مہینوں میں ان کے درمیان تناؤ کی سی کیفیت پیدا ہوئی ہے۔

صدر اوباما یہ کہہ کر سعودی عرب پر تنقید کرتے ہیں کہ وہ داعش کے خلاف لڑائی میں درکار تعانو فراہم نہیں کر رہا جب کہ سعودی عرب، ایران کے ساتھ ہونے والے چھ عالمی طاقتوں کے جوہری معاہدے پر نالاں ہے۔ ان طاقتوں میں امریکہ بھی شامل ہے۔

امریکی صدر جمعرات کو چھ ملکی خلیج تعاون کونسل کے سربراہ اجلاس میں بھی شرکت کریں گے۔

امریکہ داعش کو عالمی امن کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئے اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر عراق اور شام میں کارروائیاں کرتا آرہا ہے جب کہ سعود عرب اور دیگر خلیجی ممالک ایران کو خطے کے امن کے لیے خطرہ تصور کرتے ہیں۔

XS
SM
MD
LG