رسائی کے لنکس

اوباما نے 81 لاکھ ڈالر کا ’مینشن‘ خرید لیا، واشنگٹن میں رہائش


جنوری میں عہدے سے سبک دوش ہونے کے بعد، اوباما خاندان نے امریکی دارالحکومت کے متمول طبقے سے تعلق رکھنے والے ’کیلوراما‘ علاقے میں انگلستان کے ’ٹیوڈر خاندان‘ کی طرز تعمیر کا ایک مینشن خرید لیا ہے

سابق امریکی صدر براک اوباما اور اُن کی بیگم، مشیل نے واشنگٹن میں رہائش اختیار کرلی ہے، کم از کم کچھ عرصے کے لیے ہی سہی؛ اور اُن کا نیا گھر وائٹ ہاؤس سے زیادہ فاصلے پر نہیں ہے۔

جنوری میں عہدے سے سبک دوش ہونے کے بعد، اوباما خاندان نے امریکی دارالحکومت کے متمول طبقے سے تعلق رکھنے والے ’کیلوراما‘ علاقے میں انگلستان کے ’ٹیوڈر خاندان‘ کی طرز تعمیر کا ایک مینشن خرید لیا ہے، جس ہمسائے میں ایک طویل عرصے سے سفارت کار، لابی اسٹ اور سیاستدان رہتے رہے ہیں۔

اوباما کی چھوٹی دختر، ساشا گذشتہ دو برسوں سے واشنگٹن کے ایک نجی ہائی اسکول میں تعلیم حاصل کر رہی ہیں۔

اُنھوں نے آٹھ کمروں والا یہ گھر 81 لاکھ ڈالر میں خریدا ہے۔

اِس سے قبل یہ گھر جو لوکہارٹ کی ملکیت تھا، جو سابق صدر بِل کلنٹن کے پریس سکریٹری ہوا کرتے تھے اور اب ’نیشنل فٹبال لیگ‘ کے رابطے کے ایک اعلیٰ اہل کار ہیں۔

اوباما خاندان کےنئے ہمسائوں میں واشنگٹن کی معروف شخصیات شامل ہیں، جن میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی بیٹی، اوانکا ٹرمپ اور اُن کے شوہر جیرڈ کوشنر، جو دونوں وائٹ ہاؤس کے مشیر ہیں؛ وہ اس سال کے اوائل میں نیو یارک سے منتقل ہو کر کیلوراما کے علاقے میں آباد ہوئے؛ جب کہ امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹِلرسن بھی اُن کے قریب ہی رہتے ہیں۔

اوباما کے ترجمان نے کہا ہے کہ ’’صدر اور مسز اوباما کم از کم ڈھائی برس واشنگٹن میں رہنے کا ارادہ رکھتے ہیں، یہ بات بہتر ہے کہ کرائے پر رہنے کے بجائے اُنھوں نے جائیداد خرید لی ہے‘‘۔

اوباما خاندان کا شکاگو میں اپنا گھر ہے، جو امریکہ کا تیسرا بڑا شہر ہے۔ دراصل شکاگو ہی اوباما کا سیاسی گڑھ رہا ہے، جہاں سے ہی اُنھوں نے دو بار عہدہٴ صدارت کے لیے کامیابی حاصل کی۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG