رسائی کے لنکس

logo-print

انٹر نیٹ پر توہین آمیز خاکے شائع کرنے پر عمر قید کی سزا


پاکستان کی ایک عدالت نے انٹرنیٹ پر توہین آمیز خاکے شائع کرنے کے جرم میں ایک شخص کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔

پنجاب کے جنوبی ضلع رحیم یار خان میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے وقاص بھٹی نامی شخص پر جرم ثابت ہونے پر یہ فیصلہ سنایا۔

بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ سال جولائی میں اس شخص کے خلاف سوشل میڈیا پر توہین آمیز خاکے شائع کرنے کا الزام سامنے آیا تھا۔

پولیس نے اسے ضلعی انتظامیہ کے حکم پر تین ماہ تک نظر بند رکھا اور معاملے کی حساسیت کے پیش نظر مقدمے کی ابتدائی سماعتیں ڈسٹرکٹ جیل میں کی جاتی رہیں۔

ہفتہ کو اس مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے جج نے مجرم پر عمر قید کی سزا کے علاوہ ایک لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا۔

پاکستان میں انٹرنیٹ پر سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر توہین مذہب پر مبنی مواد کی اشاعت کے واقعات گزشتہ ایک سال کے دوران بڑی تعداد میں دیکھنے میں آئے ہیں جن کے خلاف حکام نے کارروائیاں بھی تیز کر رکھی ہیں۔

گزشتہ ہفتے ہیں وفاقی وزرات داخلہ نے پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی اور وفاقی تفتیشی ادارے "ایف آئی اے" کے نمائندوں پر مشتمل ایک کمیٹی بھی تشکیل دی تھی جو انٹرنیٹ پر توہین آمیز مواد کی روک تھام کے اقدام کرے گی۔

اب تک ایسے ہزاروں ویب سائٹ لنکس کو بلاک کیا جا چکا ہے جن پر توہین مذہب پر مبنی مواد کی نشاندہی ہوئی تھی۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG