رسائی کے لنکس

logo-print

پاکستان کے قومی سلامتی کے مشیر کابل جائیں گے


Pakistan NSA Nasir Janjua meeting Owen Jenkins

پاکستان کے قومی سلامتی کے مشیر لفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر خان جنجوعہ ہفتے کو کابل کا دورہ کریں گے۔

اُن کے دفتر کے مطابق یہ ایک روزہ دورہ ہو گا۔

ناصر خان جنجوعہ یہ دورہ افغانستان کے قومی سلامتی کے مشیر حنیف اتمار کی دعوت پر کر رہے ہیں۔

اس دورے میں کن اُمور پر بات چیت کی جائے گی اس بارے میں سرکاری طور پر کچھ نہیں بتایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کے اواخر میں افغان دارالحکومت میں ہونے والی دوسری ’کابل پراسس‘ کانفرنس سے خطاب میں صدر اشرف غنی نے افغان طالبان کو امن مذاکرات کی غیر مشروط دعوت دی تھی اور ساتھ ہی پاکستان سے تعلقات میں نئی شروعات کا بھی پیغام دیا تھا۔

صدر اشرف غنی کے اس بیان کے بعد اسلام آباد میں تعینات افغانستان کے سفیر عمر زخیلوال نے پاکستان کی قومی سلامتی کے مشیر ناصر خان جنجوعہ سے ملاقات کر کے کابل پراسس کانفرنس پر تبادلہ خیال کیا تھا۔

ناصر خان جنجوعہ نے افغان صدر اشرف غنی کی طرف سے طالبان کو مذاکرات کی پیش کش کا نہ صرف خیرمقدم کیا تھا بلکہ یہ بھی کہا تھا کہ پاکستان، افغانستان میں جاری خونریزی کا جلد خاتمہ چاہتا ہے۔

پاکستان میں عہدیدار یہ کہتے رہے ہیں کہ افغانستان میں امن پاکستان کے لیے ضروری ہے اور پاکستان عالمی اور علاقائی سطح پر افغانستان میں امن و مصالحت کی کوششوں کی ہمیشہ حمایت کرتا رہا ہے۔

پاکستانی وزارتِ خارجہ کے ترجمان محمد فیصل نے جمعرات ہی کو نیوز بریفنگ میں کہا تھا کہ عسکری کوششوں سے مطلوبہ نتائج نہیں نکلے ہیں اس لیے اس مسئلے کا سب سے موزوں حل افغانوں کی زیرِ قیادت سیاسی مذاکرات ہی سے ممکن ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG