رسائی کے لنکس

logo-print

'ان ہتھکنڈوں کے آگے نہیں جھکوں گا'


نواز شریف (فائل فوٹو)

سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے سیاسی مخالفین کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ایک بار پھر دعویٰ کیا ہے کہ ان کے خلاف سازش ہو رہی ہے جسے وہ کامیاب نہیں ہونے دیں گے جب کہ دوسری طرف سابق صدر اور حزب مخالف کی سب سے بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے بھی نواز شریف کو آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے ایک "موقع پرست" شخص قرار دیا ہے۔

عام انتخابات سے پہلے پاکستان کا سیاسی درجہ حرارت بھی ملک کی موسمی حدت کی طرح بڑھنے لگا ہے اور آئے روز سیاسی حریف ایک دوسرے پر الزامات اور طنز و تنقید کے نشتر چلاتے دکھائی دیتے ہیں۔

اتوار کو دیر گئے نواز شریف کے سب سے بڑے ناقد اور حزب مخالف کی جماعت پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے شریف برادران کو بدعنوان قرار دیتے ہوئے کڑی تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

لیکن پیر کو اسلام آباد میں حکمران جماعت مسلم لیگ ن کے قانون سازوں سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے نہ صرف عمران خان کی تنقید کو مسترد کیا بلکہ آصف علی زرداری کو بھی ملک اور خاص طور پر جنوبی صوبہ سندھ کی صورتحال کا ذمہ دار قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ مشکلات میں گھرے ہوئے ہیں لیکن وہ اس کا مقابلہ کریں گے۔ "ممکن ہے یہ کوئی ایسا فیصلہ سنا دیں, مجھے سزا سنا دیں لیکن میں اس سے گھبراتا نہیں ہوں۔ میں ان ہتھکنڈوں کے آگے جھکوں گا نہیں۔"

انھوں نے دہشت گردی اور کراچی میں خراب امن و امان کی صورتحال کو بہتر کرنے کے لیے سکیورٹی فورسز کے آپریشنز کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ انھوں نے اپنے دور میں تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت سے ان کارروائیوں کا فیصلہ کیا اور ان کے بقول سابق صدر آصف زرداری نے کیوں "دہشت گردی" پر ہاتھ نہیں ڈالا۔

ادھر آصف زرداری نے لاہور میں اپنی جماعت کے رہنماؤں سے گفتگو میں نواز شریف پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ "ایک موقع پرست" شخص ہیں جن کے ساتھ اب وہ سیاسی طور پر ہاتھ نہیں ملائیں گے۔

مبصرین یہ کہتے آ رہے ہیں کہ جمہوری ملک میں سیاسی گہما گہمی خوش آئند ہے لیکن اگر سیاسی جماعتوں کا ایک دوسرے کے خلاف الزام تراشیوں کا سلسلہ اسی شدت سے چلتا رہا تو اس سے سیاسی اقدار کے شدید متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG