رسائی کے لنکس

logo-print

قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں پولیٹیکل انتظامیہ کی عمارت کے احاطے میں پیر کو ہونے والے دوخودکش بم دھماکوں میں کم ازکم 50 افراد ہلاک اور100 سے زائد زخمی ہو گئے جن میں بعض کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔

ایجنسی کے انتظامی مرکز غلنئی میں مقامی حکام نے بتایا ہے کہ موٹرسائیکلوں پر سوار دو خودکش حملہ آوروں نے امن کمیٹی کے ایک اجلاس کو نشانہ بنایا جس میں ایک سو سے زائد افراد شریک تھے۔

ایجنسی کے پولیٹیکل ایجنٹ امجد علی خان نے صحافیوں کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ حملہ آوروں نے خاصہ داروں کی وردیاں پہن رکھی تھیں۔ ایک حملہ آور کو اہلکاروں نے انتظامیہ کے دفتر میں داخل ہونے سے روکا تو اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا جب کے دوسرے حملہ آورنے اس دوران احاطے میں داخل ہوکر دھماکا کردیا۔

انھوں نے کہا کہ دونوں خودکش بمباروں نے اپنی بارودی جیکٹوں میں چَھروں کی بجائے بندوق کی گولیاں(بُلٹس) شامل کررکھی تھیں جو کہ زیادہ تر ہلاکتوں کی وجہ بنیں۔

ہلاک ہونے والوں میں مقامی انتظامیہ کے اہلکاراور قبائلی عمائدین کے علاوہ دو صحافی بھی شامل ہیں۔

رواں سال جولائی میں بھی مہمند ایجنسی میں ایک جرگے کو نشانہ بنانے کے لیے دو خودکش بم دھماکے ہوئے تھے جس میں 102 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

XS
SM
MD
LG