رسائی کے لنکس

logo-print

عالمی نظام خوراک میں تبدیلوں کی ضرورت


عالمی نظام خوراک میں تبدیلوں کی ضرورت

ایک عالمی امدادی گروپ نے دنیا میں خوراک کی پیداوار اور تقسیم کے نظام میں فوری تبدیلیوں کا مطالبہ کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ آئندہ 20 برسوں میں زیادہ استعمال میں آنے والی غذائی اجناس مثلاً مکئی کی قیمتیں دگنی ہوجائیں گی۔

برطانوی امدادی ادارے ’اوکسفیم‘ کی طرف سے منگل کے روز جاری کی گئی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2030ء تک عالمی سطح پر غذائی ضروریات میں 70 فیصد اضافے کا امکان ہے جب کہ اس دوران ماحولیاتی تبدیلی، پیداوار میں کمی اور توانائی کے اخراجات میں اضافے کی وجہ سے خوراک کی دستیابی پر دباؤ پڑے گا۔

اوکسفیم کے مطابق اس صورتِ حال سے سب سے زیادہ غریب طبقہ متاثرہوگا جو اپنی آمدنی کا لگ بھگ 80 فی صد غذا پر صرف کر رہا ہے۔

رپورٹ میں اس مسئلے سے نمٹنے کے لیے اجناس کے ذخائر میں اضافہ، متبادل ایندھن کی تیاری کے لیے غذائی فصلوں کے استعمال کا خاتمہ اور خوراک کی عالمی منڈی میں قیاس آرائیاں بند کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔

تنظیم نے بڑے تجارتی پیداواری گروپوں کے بجائے مقامی کسانوں کی حوصلہ افزائی کرنے پر بھی زور دیا ہے۔

XS
SM
MD
LG