رسائی کے لنکس

logo-print

پاکستانی پرچم لہرانے کا تنازع، سلمان خان زخمی، مقدمہ درج


سلمان خان : فائل فوٹو

بالی ووڈ ایکٹر سلمان خان ایک بار پھر نئے تنازع میں گھر گئے ہیں۔ انہیں فلم کے ایک منظر میں پاکستانی پرچم لہرانا بھی مہنگا پڑ گیا۔

ویسے تو کالے ہرن کے شکار کا معاملہ ہو، فٹ پاتھ پر سوئے ہوئے لوگوں پر گاڑی چڑھا دینا ہو یا اسلحہ رکھنے کا مسئلہ ہو سلمان خان ایک کے بعد ایک تنازع میں پھنستے ہی آئے ہیں مگر اس بار ایک نئی نوعیت کے تنازع نے انہیں آگھیرا ہے۔

یہ تنازع ان کی نئی آنے والی فلم ’بھارت‘ کے ایک منظر میں پاکستانی پرچم لہرانے سے جڑا ہے ۔

’بھارت‘ کے پروڈیوسر اور ڈائریکٹر کا پہلے تو یہ خیال تھا کہ اس منظر کو واہگہ بارڈر پر پکچرائز کیا جائے لیکن جب اس کی اجازت نہ ملی تو پنجاب کے شہر لدھیانہ میں واہگہ بارڈر سے ملتا جلتا سیٹ بناکر سین فلمبند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

سین کے لئے شوٹنگ بھی ہو گئی لیکن جیسے ہی یہ خبر عام ہوئی کہ سلمان خان نے اس منظر میں پاکستانی پرچم لہرایا ہے، اور واہگہ بارڈرز کے سیٹ پر بنی عمارتوں پر بھی پاکستانی پرچم لہراتے دکھائے گئے ہیں، کچھ سیاسی کارکنوں اور پارٹی قیادت نے سلمان خان کے گھیراؤ کی دھمکی دے ڈالی بلکہ مظاہروں کا بھی اعلان کردیا۔

بھارتی میڈیا سے موصولہ اطلاعات میں کہا جارہا ہے کہ احتجاجی مظاہرین کی جانب سے فلم کے سیٹ توڑنے کی بھی دھمکی دی ۔

سلمان خان کے ہوٹل کا گھیراؤ کرلیا اور ان کے خلاف مقدمہ تک درج کرادیا گیا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ بھارتی سرزمین پر کسی طرح بھی پاکستانی پرچم نہیں لہرایا جاسکتا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سلمان خان نے احتجاج کے باوجود شوٹنگ جاری رکھی حالانکہ اس دوران وہ زخمی بھی ہوگئے یہاں تک کہ انہیں علاج کے لئے ممبئی واپس آنا پڑا۔

فلم ’بھارت' کے پروڈیوسر علی عباس ظفر ہیں جبکہ دیگر کاسٹ میں سلمان خان کے علاوہ کترینہ کیف، ڈیشا پٹانی، سنیل گروور اور جیکی شروف شامل ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG