رسائی کے لنکس

logo-print

بھارت جیتے گا تو پاکستان سیمی فائنل کھیلے گا


پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد اور بابر اعظم نیوزی لینڈ کے خلاف میچ جیتنے کے بعد واپس جا رہے ہیں

کرکٹ ورلڈ کپ میں نیوزی لینڈ کے خلاف کامیابی کے بعد پاکستان کے سیمی فائنل میں پہنچنے کے امکانات بہتر ہوئے ہیں۔ یہ میچ ہارنے کی صورت میں پاکستان سیمی فائنل کی دوڑ سے باہر ہو سکتا تھا۔

پاکستان کے 7 میچوں میں 7 پوائنٹس ہو گئے ہیں۔ بنگلادیش کے بھی سات 7 پوائنٹس ہیں لیکن بہتر رن ریٹ کی وجہ سے وہ پوائنٹس ٹیبل پر پانچویں اور پاکستان چھٹی پوزیشن پر ہے۔

آسٹریلیا 12 پوائنٹس کے ساتھ پہلے، نیوزی لینڈ 11 پوائنٹس کے دوسرے، بھارت 9 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے اور انگلینڈ 8 پوائنٹس کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہیں۔

پاکستان کا اگلا میچ ہفتہ 29 جون کو لیڈز میں افغانستان اور آخری میچ 5 جولائی کو لارڈز میں بنگلادیش سے ہے۔ یہ دونوں میچ جیتنے کی صورت میں پاکستان کے 11 پوائنٹس ہو سکتے ہیں۔

آسٹریلیا کے اگلے دو میچ نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقا سے ہیں۔ وہ دونوں میچ ہار کے بھی سیمی فائنل کھیل سکتا ہے۔ لیکن پوائنٹس ٹیبل پر ٹاپ ٹیم بننے کے لیے کوئی میچ ہارنا پسند نہیں کرے گا۔

نیوزی لینڈ کے 11 پوائنٹس ہیں اور سیمی فائنل کے لیے اس کی پوزیشن بھی مضبوط ہے۔ اس کے آخری دو میچ انگلینڈ اور آسٹریلیا سے ہیں۔

بھارت کے 9 پوائنٹس ہیں لیکن اس نے ابھی صرف 5 میچ کھیلے ہیں۔ ویسٹ انڈیز، انگلینڈ، بنگلادیش اور سری لنکا کے خلاف میچ باقی ہیں جس کا مطلب یہ ہے کہ وہ بھی سیمی فائنل میں جگہ بنانے میں کامیاب ہو جائے گا۔

سیمی فائنل کی چوتھی ٹیم کون سی ہو گی؟ اس کے لیے پاکستان کا مقابلہ انگلینڈ اور سری لنکا سے ہے۔ بنگلادیش بھی دوڑ میں شامل ہے لیکن اگر پاکستان اگلے دونوں میچ جیت گیا، جن میں سے ایک بنگلادیش کے خلاف ہے، تو اس کے امکانات ختم ہو جائیں گے۔

انگلینڈ کا اگلا میچ اتوار کو بھارت اور 3 جولائی کو نیوزی لینڈ کے خلاف ہے۔ اگر وہ دونوں میچ جیتا تو اس کے 12 پوائنٹس ہو جائیں گے اور پاکستان کا چانس ختم ہو جائے گا۔ اگر وہ ایک میچ ہارا تو پاکستان کے ممکنہ 11 پوائنٹس کی وجہ سے سیمی فائنل نہیں کھیل سکے گا۔

سری لنکا کے 6 میچوں میں 6 پوائنٹس ہیں۔ اس کے باقی تین میچ جنوبی افریقا، ویسٹ انڈیز اور بھارت کے خلاف ہیں۔ اگر وہ تینوں میچ جیت جائے تو اس کے بھی 12 پوائنٹس ہو سکتے ہیں۔ اس صورت میں بھی پاکستان ٹورنامنٹ سے باہر ہو جائے گا۔

پاکستان کے سیمی فائنل کھیلنے کے لیے ضروری ہے کہ نہ صرف ٹیم اگلے دونوں میچ جیتے بلکہ انگلینڈ اور سری لنکا کم از کم ایک ایک میچ ہاریں۔ مبصرین کہتے ہیں کہ ایسا ہونا ناممکن نہیں۔

بہت ممکن ہے کہ پاکستان کا روایتی حریف بھارت ہی پاکستان کی مدد کو آئے اور انگلینڈ اور سری لنکا کو شکست دے کر ہمسایوں کو سیمی فائنل کھیلنے کا موقع فراہم کرے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG