رسائی کے لنکس

logo-print

شام میں جنگ بندی پر بات چیت کے لیے امریکی نائب صدر کا دورۂ ترکی


امریکی نائب صدر مائیک پینس۔

امریکی نائب صدر مائیک پینس اور وزیر خارجہ مائیک پومپیو بدھ کے روز ترکی کے دورے پر روانہ ہو رہے ہیں۔

مائیک پینس جمعرات کو ترک صدر رجب طیب ایردوان سے ملاقات کریں گے اور شام کی صورت حال پر بات کریں گے۔

وائٹ ہاؤس سے منگل کو جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ترک صدر سے بات چیت میں امریکی نائب صدر شام میں جنگ بندی اور مذاکرات کے ذریعے تصفیے پر زور دیں گے۔

وائٹ ہاؤس کے مطابق نائب صدر مائیک پینس ترک قیادت تک یہ بات بھی پہنچائیں گے کہ جب تک معاملے کا حل تلاش نہیں کیا جاتا، صدر ٹرمپ اس عہد پر قائم ہیں کہ ترکی کے خلاف سخت معاشی تعزیرات جاری رکھی جائیں گی۔

ترکی کا دورہ کرنے والے وفد میں مائیک پومپیو کے علاوہ قومی سلامتی کے مشیر رابرٹ اوبرائن بھی شامل ہوں گے۔

پیر کے روز وزیر مالیات اسٹیو منوشن کے ہمراہ نائب صدر مائیک پینس نے وائٹ ہاؤس میں ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ابتدائی طور پر ترکی کے دفاع، توانائی اور داخلہ کے وزرا پر تعزیرات عائد کی گئی ہیں۔

پینس نے کہا کہ ’’امریکہ نے ترکی کو شام میں داخل ہونے کا کوئی اشارہ نہیں دیا تھا۔ اس معاملے پر صدر بالکل واضح نکتہ نظر رکھتے ہیں۔ آج صدر ایردوان سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے سختی سے کہا کہ وہ فوری طور پر جنگ بندی کے لیے تیار ہو جائیں۔‘‘

امریکی نائب صدر نے کہا کہ ترک صدر رجب طیب ایردوان نے صدر ٹرمپ کو یقین دلایا ہے کہ وہ کرد شہر کوبانی پر حملہ نہیں کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پیر کی شام ساؤتھ کیرولینا سے تعلق رکھنے والے ری پبلکن پارٹی کے سینیٹر لنڈسے گراہم کی صدر ٹرمپ سے ملاقات ہوئی ہے۔ ملاقات کے دوران صدر نے حکم نامے پر دستخط کیے جس میں ترکی کے خلاف نئی پابندیاں عائد کی گئیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG