رسائی کے لنکس

logo-print

پی آئی اے کے طیارے میں قومی پرچم کے ساتھ خاتون کے رقص کی ویڈیو پر ہنگامہ


ایک غیر ملکی خاتون نے پاکستان کا جھنڈا لے کر پی آئی اے کے جہاز پر اپنی ویڈیو تیار کی۔ یہ ویڈیو پی آئی اے کے سوشل میڈیا پر فیس بک پیج پر شیئر کیے جانے کے کچھ ہی دیر میں وائرل ہو گئی۔

اس ویڈیو پر قومی پرچم کی بے حرمتی کے الزام میں ہنگامہ برپا ہو گیا ہے اور چیئرمین نیب نے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سبز قمیض اور سفید شلوار میں ملبوس ایک خاتون پاکستانی پرچم لے کر پہلے جہاز کے اندر اور پھر جہاز سے اتر کر رقص کر رہی ہے۔

سوشل میڈیا پر بہت سے افراد نے اس کی تعریف کی اور بعض نے تنقید کا نشانہ بنایا۔

PIA Dance -2
please wait
Embed

No media source currently available

0:00 0:00:35 0:00

تاہم شام کو ٹی وی کے نیوز چینلزپر ٹکر چلنے لگے جن میں کہا گیا کہ چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاويد اقبال نے پی آئی اے کے سی ای او کی جانب سے اختیارات کے ناجائز استعمال کا نوٹس لے لیا ہے کہ ایک غیر ملکی خاتون قومی پرچم کی بے حرمتی کرتے ہوئے رن وے اور پھر جہاز تک کیسے پہنچی؟ غیر ملکی خاتون کی جانب سے قومی پرچم کی بے حرمتی کے ذمہ دار تمام متعلقہ عہدے داروں کے خلاف کارروائی اور فوری نشاندہی کا حکم دیا ہے۔

، پاکستان کی عزت اور حرمت کی پامالی کرنے والے کسی بھی شخص خصوصاً قومی پرچم کی بے حرمتی کرنے والے کو کسی صورت کوئی رعایت نہ دی جائے۔ پی آئی اے کے چیف ایکزیکٹو اور متعلقہ حکام کے خلاف اس شرمناک حرکت پر سخت ایکشن لیا جائے گا،

نیب حکام کے یہ ٹکر چلنے کے چند لمحوں بعد ہی ترجمان پی آئی اے مشہود تاجور کا ایک پیغام موصول ہوا جس میں ان کا کہنا تھا کہ یوم آزادی کے حوالے سے ایک غیر ملکی خاتون کی سوشل میڈیا میں وائرل ہونے والی ویڈیو سے پی آئی اے کا کوئی تعلق نہیں۔ یہ ویڈیو پی آئی اے کے فیس بک پیج پر شیئر کی گئی تھی جسے اب ہٹا دیا گیا ہے اور اس سلسلے میں مزید انکوائری بھی کی جا رہی ہے

تاہم یہ خاتون رن وے اور پھر جہاز پر کس کی اجازت سے پہنچی اور فلم بنواتی رہی اس پر مشہود تاجور کا کہنا تھا کہ سردست ان کے پاس کوئی معلومات نہیں ہیں، اس معاملہ کی مکمل تحقیقات ہوں گی۔

اس ویڈیو پر رد عمل کے بعد ایوا نامی اس خاتون نے ایک اور ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں ان کا کہنا تھا کہ وہ کراچی کا سفر کر رہی تھی کہ انہیں کسی نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کے فروغ کے لیے وہ کوئی ویڈیو تیار کریں۔

PIA Dance - 1
please wait
Embed

No media source currently available

0:00 0:00:59 0:00

ایوا کا کہنا ہے کہ اس ویڈیو کے بعد انہیں بہت سے پسندیدگی کے کمنٹس اور پیغامات ملے ہیں۔ لیکن اگر کسی کی اس ویڈیو سے دل آزاری ہوئی ہے تو وہ معذرت چاہتی ہیں۔

ایوا نے کہا کہ وہ پاکستان میں سیاحت کے فروغ کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھیں گی۔

ایوا نے اپنی ویڈیو میں نہیں بتایا کہ ان کا تعلق کس ملک سے ہے۔

اس ویڈیو پر اعتراض تو بہت ہوا لیکن دیکھنے والے اسے پسند بھی کررہے ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG