رسائی کے لنکس

تشدد کے الزام میں سعودی شہزادہ گرفتار


یوٹیرب پر شائع ہونے والی ایک ویڈیو میں شہزاد سعود بن عبدالعزیز کو ایک شخص پر تشدد کرتے دکھایا گیا ہے۔ 19 جولائی 2017

سماجی میڈیا پر وڈیوز شائع ہوئیں جن میں لوگوں نےاُنھیں پہنچنے والی تکالیف کا ذکر کیا، جس پر حکمران شاہ سلمان نے شہزادہ سعود بن عبد العزیز بن مسعود بن سعود بن عبد العزیز کی گرفتاری اور تفتیش کا حکم جاری کیا تھا

شاہ سلمان کے خاص احکامات پر، سعودی عرب میں پولیس نے جمعرات کو ایک شہزادے کو گرفتار کر لیا، جس سے قبل وڈیوز منظر عام پر آئی تھیں، جن میں دکھایا گیا تھا کہ وہ کئی افراد کے ساتھ اذیت ناک رویے سے پیش آئے۔

سرکاری تحویل میں کام کرنے والے ادارے نے بدھ کو خبر دی ہے کہ سماجی میڈیا پر وڈیوز شائع ہوئیں جن میں لوگوں نےاُنھیں پہنچنے والی تکالیف کا ذکر کیا، جس پر حکمران شاہ سلمان نے شہزادہ سعود بن عبد العزیز بن مسعود بن سعود بن عبد العزیز کی گرفتاری اور تفتیش کا حکم جاری کیا تھا۔

ایک وڈیو میں، ایک شخص کار میں بیٹھا ہوا ہے جس کے جسم سے خون بہہ رہا ہے، جب کہ شہزادہ اُس شخص کو بُرا بھلا کہہ رہے ہیں، اس جرم پر کہ اُنھوں نے اپنی گاڑی اُن کے گھر کے سامنے کیوں کھڑی گی۔

دوسری وڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ شہزادہ کرسی پر بیٹھے ایک شخص کو مار پیٹ کا نشانہ بنا رہے ہیں۔ پیٹنے والا شخص بار بار یہ کہتا دکھایا گیا ہے کہ ’’خدا جانتا ہے میں نے کچھ نہیں کیا۔ میں خدا کی قسم کھاتا ہوں‘‘۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG