رسائی کے لنکس

logo-print

تین سال بعد لاپتا ملائیشین جہاز کی تلاش کا کام بند


مارچ 2014ء میں ملائیشیاں کا یہ جہاز کوالالمپور سے بیجنگ جاتے ہوئے لاپتا ہو گیا تھا، اس پر 227 مسافر اور عملے کے 12 ارکان سوار تھے۔

ملائیشیا کے لاپتا ہونے والے مسافر طیارے "فلائیٹ 370" کی تلاش تقریباً تین سال تک جاری رہنے کے بعد بھی نتیجہ خیز ثابت نہیں ہو سکی جس پر منگل کو یہ سرگرمی ختم کر دی گئی۔

جہاز کی تلاش کے لیے آسٹریلیا میں قائم مشترکہ سینٹر کا کہنا ہے کہ کارکنوں نے بحر ہند میں تقریباً ایک لاکھ 20 ہزار کلومیٹر علاقے کو چھان مارا مگر انھیں سراغ نہیں ملا جس پر یہ سرگرمی معطل کی جا رہی ہے۔

سینٹر نے ایک بیان میں کہا کہ "دستیاب بہترین سائنس اور جدید ٹیکنالوجی کے استعمال سے کی جانے والی تمام کوششوں کے باوجود بھی بدقسمتی سے جہاز تلاش نہیں کیا جا سکا ہے۔ لہذا ایم ایچ 370 کی زیر سمندر تلاش کا کام معطل کیا جا رہا ہے۔"

جہاز کی گمشدگی کی تحقیقات کرنے والے حکام نے حالیہ جائزوں کے تناظر میں تلاش میں سرگرم کارکنوں کو شمال کی جانب بھیجے جانے کی سفارش کی تھی۔ لیکن آسٹریلیا کی حکومت اسے پہلے ہی مسترد کر چکی ہے۔

گزشتہ سال آسٹریلیا، ملائیشیا اور چین نے اتفاق کیا تھا کہ تلاش کی سرگرمیوں معطل کر دی جائیں گے تاوقتیکہ طیارے سے متعلق مخصوص نئے شواہد نہ مل جائیں۔ تلاش کے کام کے لیے وسائل ان ہی تین ملکوں نے فراہم کیے تھے۔

مارچ 2014ء میں ملائیشیاں کا یہ جہاز کوالالمپور سے بیجنگ جاتے ہوئے لاپتا ہو گیا تھا، اس پر 227 مسافر اور عملے کے 12 ارکان سوار تھے۔

XS
SM
MD
LG