رسائی کے لنکس

logo-print

شاہ سلمان کی کرائسٹ چرچ حملے کے متاثرہ خاندانوں کو حج کی دعوت


سعودی شاہ کی دعوت پر 200 عازمین کو مکہ لانے کے لیے وزارت مذہبی امور نے رابطے شروع کر دیے ہیں — فائل فوٹو

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد پر دہشت گردی کے حملے میں ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کے 200 افراد سعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی دعوت پر آئندہ ماہ فریضہ حج ادا کریں گے۔

سعودی فرماں رواں شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے ہدایات جاری کی تھیں کہ وہ رواں سال کرائسٹ چرچ حملوں کے متاثرہ افراد کے اہل خانہ کی میزبانی کریں گے جس کے دوران وہ فریضہ حج اور عمرہ کی سعادت حاصل کریں گے۔

سعودی عرب ک وزارت اسلامی امور کے وزیر شیخ عبدالطیف الشیخ نے بدھ کے روز اعلان کیا تھا کہ کرائسٹ چرچ حملوں میں ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کے 200 افراد کو حج کی ادائیگی کے دعوت نامے بھیج دیے گئے ہیں۔

شیخ عبدالطیف الشیخ نے کہا ہے کہ کرائسٹ چرچ حملوں کے متاثرہ خاندانوں کو حج پر بلانا سعودی عرب کی دہشت گردی کو شکست دینے اور اس کا مقابلہ کرنے کی کوششوں کا حصہ ہے۔

نیوزی لینڈ سے 200 عازمین کو مکہ لانے کے لیے سعودی وزارت مذہبی امور نیوزی لینڈ میں سعودی سفارت خانے کے درمیان رابطے شروع ہو چکے ہیں اور مہمانوں کی آمد کے لیے تمام انتظامات کیے جا رہے ہیں۔

نیوزی لینڈ سے فریضہ حج ادا کرنے والے عازمین کو عام طور پر 15 ہزار ڈالرز ادا کرنا ہوتے ہیں لیکن شاہ سلمان کی دعوت پر آنے والے عازمین یہ رقم ادا نہیں کریں گے۔

یاد رہے کہ رواں سال مارچ میں نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد پر نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے آنے والے افراد کو مسلح شخص نے گولیوں کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں 51 ہلاک اور 20 زخمی ہوئے تھے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG