رسائی کے لنکس

logo-print

صومالیہ میں الشباب پر امریکی فضائی حملہ


صومالی دارالحکومت موغادیشو میں ایک پولیس اسٹیشن کے نزدیک الشاب کا بم حملہ۔ 22 جون 2017

فضائی حملے کے بعد افریقہ کے لیے امریکی کمان نے کہا کہ ان کی فورسز الشاب کو شکست دینے اور صومالیہ میں محفوظ فضا قائم کرنے کے لیے صومالي حکومت، صومالیہ کی قومی فوج اور افریقہ میں اپنے شراکت داروں کی بدستور حمایت اور مدد کرتی رہیں گی۔

امریکی فوج نے جنوبی صومالیہ میں عسکریت پسند گروپ الشباب پر فضائی حملے کیے ہیں۔

پیر کے روز افریقہ کے لیے امریکی کمانڈ نے ترجمان چک پر یچارڈ نے بتایا کہ اس وقت ہم فضائی کارروائی کے نتائج کا تخمینہ لگا رہے ہیں اور اس کے بعد ہم مزید معلومات فراہم کریں گے۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ اتوار کے روز کیے جانے والے حملوں کونیا برو میں گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا جو زیریں شبلی کے علاقے میں واقع ہے۔

ذرائع کا یہ بھی کہناہے کہ اس حملے میں الشباب کے ایک اعلیٰ عہدے دار کو ہدف بنایا گیا تھا۔ تاہم اس بارے میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں گئیں۔

فضائی حملے کے بعد افریقہ کے لیے امریکی کمان نے کہا کہ ان کی فورسز الشاب کو شکست دینے اور صومالیہ میں محفوظ فضا قائم کرنے کے لیے صومالي حکومت، صومالیہ کی قومی فوج اور افریقہ میں اپنے شراکت داروں کی بدستور حمایت اور مدد کرتی رہیں گی۔

ان فضائی حملوں سے تقریباً دو ماہ پہلے صومالیہ میں الشاب کے خلاف کارروائی میں ایک امریکی فوجی ہلاک ہو گیا تھا۔ جب کہ عسکریت پسندوں کے ایک کمانڈر سمیت 8 عسکریت پسند مارے گئے تھے اور ان کے ریڈیو اسٹیشن کے آلات قبضے میں لے لیے گئے تھے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG