رسائی کے لنکس

logo-print

شام میں جہادیوں نے 150 باغیوں کو موت کی سزا دے دی


فائل فوٹو

امریکہ میں قائم ایس آئی ٹی ایس تنظیم نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ قتل کیے جانے والے درجنوں افراد کا تعلق فری سیرن آرمی سے تھا۔

دهشت گرد ی پر نظر رکھنے والی ایک تنظیم ایس آئی ٹی ایس نے کہا ہے کہ شام کے اسلام پسند جنگجوؤں نے ملک کے مغربی حصے میں ایک ایسے وقت میں بڑی تعداد میں شورش پسندوں کو موت کی سزائیں دی ہیں جب وہاں مختلف عسکریت پسند گروپس کے درمیان لڑائیوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔

عسکریت پسند گروپ جند الاقصی سے الگ ہونے والے ایک گروہ نے جنوبی صوبے ادلب کے ایک قصبے خان شیخوں میں ایک باغی گروپ کے 150 سے زیادہ ارکان کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

امریکہ میں قائم ایس آئی ٹی ایس تنظیم نے القاعدہ کے حامی ایک سوشل میڈیا سائٹ کے حوالے بدھ کو جاری ہونے والی اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ قتل کیے جانے والے درجنوں افراد کا تعلق فری سیرن آرمی سے تھا۔

ہلاک کیے گئے باقی ماندہ افراد تحریر الشام الائنس کے ارکان تھے اور ان میں شام میں القاعدہ کی سابقہ شاخ جبہتھ فتح الشام کے ممبر شامل تھے۔

جند الاقصیٰ کے نظریات اسلامک اسٹیٹ کے قریب تر ہیں جو القاعدہ کا حریف گروپ ہے۔

جند الاقصیٰ اور تحریر الشام کے درمیان لڑائیوں میں پچھلے ہفتے تیزی آئی ہےاور ان دونوں کے درجنوں کارکن مارے گئے ہیں۔

XS
SM
MD
LG