رسائی کے لنکس

logo-print

کرزئی کی طالبان کو مذاکرات کی پیشکش


افغان صدر حامد کرزئی
افغانستان کے صدر حامد کرزئی نے ایک بار پھر طالبان جنگجوؤں پر زور دیا ہے کہ وہ ہتھیار پھینک کر سیاسی عمل میں شریک ہوں۔

کابل میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صدر کرزئی نے کہا طرفین مشترکہ مقاصد پر مبنی امن مذاکرات شروع کرسکتے ہیں۔ انھوں نے مفرور طالبان رہنما ملا عمر سے مطالبہ کیا کہ وہ افغانستان میں جہاں بھی چاہیں سیاسی دفتر کھولیں لیکن حملہ بند ہونے چاہیئں۔

افغان صدر متعدد بار طالبان سے مطالبہ کرچکے ہیں کہ وہ اتحادی اور افغان فورسز پر حملے بند کریں، تشدد کی راہ ترک کرکے پرامن طریقے سے معاشرے کا حصہ بنیں۔

لیکن طالبان کرزئی انتظامیہ سے یہ کہہ کر مذاکرات کرنے سے انکار کرتے ہیں کہ یہ بین الاقوامی اتحاد کی ’’ کٹھ پتلی حکومت‘‘ ہے۔
XS
SM
MD
LG