رسائی کے لنکس

اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ٹرمپ نے کہا ہےکہ ’’صرف جعلی خبروں کے ادارے اور ٹرمپ کے دشمن چاہتے ہیں کہ میں سماجی میڈیا کے رابطے کا استعمال بند کردوں (جن کی تعداد 11 کروڑ ہے)۔ جو میرے لیے سچ بیان کرنے کا ایک واحد ذریعہ ہے‘‘

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے منگل کے روز کہا ہے کہ وہ سماجی میڈیا کےذریعے اکثر و بیشتر اپنے خیالات بیان کرنے کا عمل جاری رکھنا چاہتے ہیں۔

اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر ٹرمپ نے کہا ہےکہ ’’صرف جعلی خبروں کے ادارے اور ٹرمپ کے دشمن چاہتے ہیں کہ میں سماجی میڈیا کے رابطے کا استعمال بند کردوں (جن کی تعداد 11 کروڑ ہے)۔ جو میرے لیے سچ بیان کرنے کا ایک واحد ذریعہ ہے‘‘۔

تاہم، ٹرمپ کے استفسار کے برخلاف، اہم امریکی اخباری اداروں نے، جنھیں وہ اکثر ’’جعلی خبریں‘‘ قرار دیتے ہیں، اُنھیں سماجی میڈیا پر بیان دینے سے رکنے کے لیے نہیں کہا۔ بلکہ، وہ ٹوئٹر پر شائع ہونے والے اُن کے ٹوئیٹس کا اکثر حوالہ دیتے ہیں، اور وہ اِنھیں اُس خاص وقت میں اُن کی سوچ کا اظہار خیال کرتے ہیں، جو علی الصبح سے لے کر رات گئے تک کسی بھی وقت موصول ہو سکتی ہیں۔

لیکن، وائٹ ہاؤس کے کچھ مشیر اور ری پبلیکن اور ڈیموکریٹ قانون سازوں نے ٹوئٹر کے استعمال پر نکتہ چینی کرتے ہیں، چھ مہینے کی میعاد صدارت کے دوران، اِن ٹوئیٹس کی کُل تعداد تقریباً ایک ہزار ہے۔

اپنی ٹوئیٹس میں ٹرمپ اسپورٹس چمپئنز اور گروپوں کو مبارک باد دینے سے لے کر قانون سازوں کے خطاب پر مشتمل چُبھتے ہوئے اور تُرش کلمات شامل ہوتے ہیں، جو اُن پالیسیوں کو مسترد کرچکے ہیں جن پر وہ عمل درآمد کرانا چاہتے ہیں؛ یا پھر خبروں کے اُن اداروں کی جانب سے شائع یا نشر کردہ ایسی رپورٹیں جن میں اُن کے بارے میں ناپسندیدہ باتیں کی گئی ہوں۔

ٹرمپ اُن باتوں پر شاباشی بھی دیتے ہیں جن کو وہ پسند کرتے ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG