رسائی کے لنکس

امریکی فوج میں ٹرانس جینڈر افراد کی بھرتی پر پابندی


فائل فوٹو

مسٹرٹرمپ نے بدھ کے روز  ٹوئیٹر پر اپنے تبصروں میں  کہا کہ انہوں نے فوجی ماہرین اور جنرلوں سے مشاورت کے بعد یہ حکم دیا ہے کہ فوج میں  ٹرانس جینڈرافراد کی بھرتی روک دی جائے۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ اب امریکی فوج کے کسی بھی شعبے میں اور کسی بھی حیثیت میں ٹرانس جینڈر افراد( خواجہ سراؤں) کو بھرتی نہیں کیا جائے گا۔

اس فیصلے سے وہ حکومتی پالیسی تبدیل ہوگئی ہے جس کا اعلان سابق صدر اوباما کی انتظامیہ نے ایک سال پہلے کیا تھا۔

مسٹرٹرمپ نے بدھ کے روز ٹوئیٹر پر اپنے تبصروں میں کہا کہ انہوں نے فوجی ماہرین اور جنرلوں سے مشاورت کے بعد یہ حکم دیا ہے کہ فوج میں ٹرانس جینڈرافراد کی بھرتی روک دی جائے۔

صدر ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں کہا ہے کہ ہماری فوج کو لازماً اپنی توجہ فتح پر مرکوز رکھنی چاہیے اور ان پر غیر معمولی میڈیکل بوجھ نہیں ڈالا جاسکتا ، فوج کے اندر رہتے ہوئے ٹرانس جینڈر جس کے حق دار ہوتے ہیں۔

صدر ٹرمپ نے اس بارے میں کچھ نہیں کہا کہ جو ٹرانس جینڈر پہلے ہی فوج میں بھرتی ہو چکے ہیں ان کا مستقبل کیا ہو گا۔

ایک تھینک ٹینک رینڈ کارپوریشن کے مطابق ان کی تعداد چار ہزار کے لگ بھگ ہے۔

وہائٹ ہاؤس کی ترجمان سارا سینڈرز نے کہا ہے کہ فوج میں پہلے سے موجود ٹرانس جینڈر افراد کی قسمت کے فیصلے کے لیے صدر ٹرمپ محکمہ دفاع کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG