رسائی کے لنکس

logo-print

امریکی اور یورپی معیشتوں پر آئی ایم ایف کی مایوسی


امریکی اور یورپی معیشتوں پر آئی ایم ایف کی مایوسی

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ یعنی آئی ایم ایف نے امریکہ اور یورپی معیشتوں کے مستقبل کےبارے ان خدشات کا اظہار کرتے ہوئے اپنی توقعات میں کمی کردی ہے کہ یورپ سرکاری قرضوں کے بحران کو حل نہیں کرپائے گا۔

منگل کے روز آئی ایم ایف نے کہا کہ موجودہ اور اگلے سال کے دوران عالمی معیشت چار فی صد کی شرح سے ترقی کرے گی ۔ اس اضافے کی ایک بڑی وجہ چین، بھارت اور برازیل کی معیشتوں کا پھیلاؤ ہے۔

لیکن عالمی ادارے نے امریکہ اور یورو استعمال کرنے والے 17 یورپی ممالک کی معیشتوں کی ایک مایوس کن تصویر پیش کی ہے۔

عالمی سطح پر فنڈز مہیا کرنے والے ادارے کی پیش گوئی میں کہا گیا ہے کہ اس سال امریکی معیشت ، جس کاشمار دنیا کی سب سے معاشی قوت کے طور پر کیا جاتاہے، صرف ڈیڑھ فی صد کی شرح سے بڑھے گی اور اگلے سال یہ اضافہ صرف 1.8 فی صد تک محدود رہے گا۔جب کہ اس سے قبل جون میں آئی ایم ایف نے کہا تھا کہ 2012ء میں امریکی معیشت ڈھائی فی صد کی رفتار سے بڑھے گی۔

آئی ایم ایف نے یورو زون کی معیشت کے لیے بھی اپنی پیش گوئی کی سطح گھٹا دی ہےجس کی وجہ اس کے یہ خدشات ہیں کہ یونان اپنے بین الاقوامی قرضے ادا نہیں کرپائے گا جس کے اثرات پوری یورپی معیشت پر مرتب ہوں گے۔

عالمی مالیاتی ادارے کا کہناہے کہ اس سال یورپی معیشت میں صرف 1.6فی صد اضافہ ہوگا اور اگلے سال یہ رفتار مزید گھٹ کر 1.1 فی صد پر آجائے گی۔جب کہ جون میں آئی ایم ایف نے یورپی معیشت کی افزائش کے بارے میں اس سے بہتر پیش گوئی کی تھی۔

XS
SM
MD
LG