رسائی کے لنکس

logo-print

عیسائیت قبول کرنے والا افغان شہری جیل سے رہا


عیسائیت قبول کرنے والا افغان شہری جیل سے رہا

افغان حکام کا کہنا ہے کہ اسلام چھوڑ کر عیسائیت اختیار کرنے والے ایک مقامی شخص کو نو ماہ کی حراست کے بعد سرکاری تحویل سے رہا کردیا گیا ہے۔

جمعہ کے روز افغان دارالحکومت کابل کی مرکزی جیل کی انتظامیہ نے تصدیق کی کہ استغاثہ کی جانب سے ناکافی شہادتوں کی بنیاد پر مقدمہ چلانے سے سے معذوری ظاہر کرنے کے بعد سید موسیٰ نامی قیدی کو رواں ہفتے کے آغاز میں رہا کردیا گیا تھا۔

46 سالہ سید موسیٰ کو حکام نے ایک مقامی افغان چینل سے اسکی بپتسمہ کی تقریب کی ویڈیو نشر ہونے کے بعد گزشتہ سال مئی میں گرفتار کیا تھا۔ یہ واضح نہیں کہ رہائی کے بعد چھ بچوں کا باپ سید موسیٰ کہاں مقیم ہے۔

حکام کے مطابق اسلام ترک کرکے عیسائیت قبول کرنے والا شعیب اسد اللہ نامی ایک اور شخص اس وقت بھی حکومت کی تحویل میں ہے۔ اسداللہ کو گزشتہ سال اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب اس نے ایک دوست کو عیسائیوں کی مذہبی کتاب بائبل پڑھنے کیلیے دی تھی۔

XS
SM
MD
LG