رسائی کے لنکس

logo-print

افغان پارلیمان نے نو ارکان کو بے دخل کیے جانے کے فیصلے کو مسترد کردیا


افغان پارلیمان نے نو ارکان کو بے دخل کیے جانے کے فیصلے کو مسترد کردیا

افغان پارلیمان نے انتخابات میں دھاندلی کے الزامات پر نو قانون سازوں کوبے دخل کرنے کےبارے میں ملک کے آزاد الیکشن کمیشن کے فیصلے کو مسترد کردیا ہے۔

قانون ساز ادارے نے بدھ کو استصواب کے ذریعے اِس فیصلے کو خارج کردیا ، حالانکہ اِسی ماہ کے آغاز میں ایک حکمنامے کے ذریعےصدر حامد کرزئی نے کہا تھا کہ انتخابی نتائج پر شکایات پر حتمی فیصلے کا اختیار کمیشن کے پاس ہی ہونا چاہیئے۔

پارلیمنٹ کے ایوانِ زیریں میں ہونے والے ووٹ کی زیادہ تر ایک علامتی حیثیت ہواکرتی ہے۔

اقوام متحدہ کے اعانتی مشن برائے افغانستان نے منگل کو کہا کہ وہ آزاد الیکشن کمیشن کے فیصلے کی حمایت کرتا ہے۔ اس بیان کے بعد سینکڑوں برہم افغانوں نے کابل میں اقوام متحدہ کے دفاتر کی طرف ایک ریلی نکالی۔

آزاد الیکشن کمیشن نے اتوار کے روز مطالبہ کیا تھا کہ ووٹنگ میں دھاندلی کے الزامات پر62قانونسازوں میں سے نو کو ہٹا کر اُن کے متبادل لائے جائیں۔

XS
SM
MD
LG