رسائی کے لنکس

logo-print

ایپل ایک ٹریلین ڈالر مالیت کی سب سے بڑی کمپنی بننے والی ہے


الیکٹرانکس کی ایک بڑی کمپنی’ ایپل‘دنیا کی ایسی پہلی کمپنی بننے جا رہی ہے جس کی مالیت ایک ٹریلین ڈالر ہوگی۔

ایپل کے شریک بانی سٹیو جوبز نے 1976 میں اس کمپنی کی بنیاد ایک چھوٹے سے گیراج میں رکھی تھی۔ جس کے بنائے ہوئے کمپیوٹر مقبول ہونے لگے اور اس کا کاروباری حجم بڑھنا شروع ہو گیا۔

ایک دور ایسا بھی آیا کہ اپیل کی مصنوعات کی مانگ کم ہونے لگی اور اس کا حجم گھٹنے لگا۔ انہی دنوں ایپل نے آئی فون متعارف کرایا جس نے کامیابیوں کے نئے ریکارڈ قائم کر دیے اور کمپنی نہ صرف یہ کہ سنبھل گئی بلکہ تیزی سے ترقی کرنے لگی۔

گیراج سے شرع ہونے والی ایپل کمپنی کی سالانہ آمدنی 229 ارب ڈالر تک پہنچ چکی ہے۔ یہ رقم پرتگال اور نیوزی لینڈ جیسے ملکوں کی سالانہ قومی پیداوار سے زیادہ ہے۔

جمعرات کے روز کمپنی کا سرمایہ 934 ارب ڈالر کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا ۔

ایپل کی آمدنی میں حال ہی میں 31 فی صد کے ریکارڈ اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ اس کی نسبتاً نئی سروسز ہیں، جن میوزک کی آن لائن سٹریمننگ اور آن لائن سٹوریج کی فراہمی ہے۔

مارکیٹ کے تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ایپل کو 934 ارب ڈالر سے ایک ٹریلین کی سطح تک پہنچنے میں زیادہ وقت نہیں لگے گا کیونکہ اس کے شیئرز کی بڑی مانگ ہے اور ان کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ حال ہی میں اس کے شیئر کی قیمت 195 ڈالر سے بڑھ کر 210 ہو ئی ہے۔

تاہم تجزیہ کاروں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایپل اپنا ایک ٹریلین ڈالر کا اعزاز زیادہ عرصے تک برقرار نہیں رکھ سکے گا۔ کیونکہ ایک اور کمپنی کی مالیت میں بھی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ آن لائن خرید و فروخت کرنے والی کمپنی ہے اور اس کا نام ہے ایمزان ڈاٹ کام۔

اس وقت ایمزان کی مالیت 780 ارب ڈالر ہے ۔ یہ مالیت کے اعتبار سے امریکہ کی دوسری سب سے بڑی کمپنی ہے۔ اس کی سروسز کا دائرہ وسیع ہو رہا ہے اور اس کے شیئر کی قیمت بڑھنے کی رفتار ایپل سے زیادہ ہے۔ مارکیٹ کے ماہرین کہتے ہیں کہ ایمزان بہت جلد ایپل کو پیچھے چھوڑ کر امریکہ کی سب سے بڑی کمپنی کا اعزاز حاصل کر لے گا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG