رسائی کے لنکس

logo-print

آسٹریلیا میں جنگلات کی آگ سے نصف ارب جاندار ہلاک


ایک فائر فائٹر آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی آگ بجھانے کی کوشش کر رہا ہے۔

بہت کم لوگ اس بات کا ادراک کر پاتے ہیں کہ ماحولیاتی آلودگی اور درجہ حرارت میں اضافے کا کیا مطلب ہے اور زمین پر موجود زندگی کیسے متاثر ہو سکتی ہے۔ ایسے لوگوں کے لیے آسٹریلیا کی صورت حال ایک مثال ہے جہاں درجہ حرارت میں ریکارڈ شدت سے مختلف مقامات پر جنگلوں میں آگ بھڑک اٹھی اور اس کے نتیجے میں لگ بھگ نصف ارب جانور ہلاک ہو گئے۔

آسٹریلیا کی صرف ایک ریاست نیو ساؤتھ ویلز میں گزشتہ چند ماہ کے دوران 30 لاکھ ہیکٹر کا رقبہ جل کر راکھ ہو چکا ہے۔ ان میں نازک مزاج کوالا کی رہائش گاہیں شامل ہیں۔ بہت سے کوالا ہلاک ہو گئے ہیں اور جن کوالاز کو بچالیا گیا ہے، ان کی زندگی بھی پہلے جیسی نہیں رہے گی۔ اس جانور کو قید رکھا جائے تو دیکھ بھال کے باوجود بیمار ہو جاتا ہے اور آزاد رہ کر صحت مند رہتا ہے۔

آسٹریلیا کا منفرد جانور کوالا
آسٹریلیا کا منفرد جانور کوالا

سڈنی یونیورسٹی کے پروفیسر کرس ڈک مین نے ایک اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کم از کم 48 کروڑ جانور، پرندے اور حشرات براہ راست آگ یا دھوئیں سے ہلاک ہوئے ہیں۔ شاید کچھ جانداروں کی نسل کو دوبارہ نہیں دیکھا جا سکے گا۔ واضح رہے کہ آسٹریلیا منفرد جانوروں کی سرزمین ہے اور وہاں کے متعدد جاندار دنیا کے دوسرے مقامات پر نہیں پائے جاتے۔

صرف پورٹ میک کوائر اور بریمر کے جنگلات میں دو ہزار سے زیادہ کوالا ہلاک ہوئے ہیں۔ پروفیسر ڈک مین نے کہا کہ آپ کہہ سکتے ہیں کہ کچھ مقامات پر کوالا ناپید ہو گئے ہیں۔ صرف یہی جانور نہیں بلکہ کئی دوسرے جانور بھی ایسے ہی خطرے سے دوچار ہیں۔

25 سال پہلے بھی جنگلوں میں ایسی ہی آگ لگی تھی جن سے کئی جاندار نایاب ہو گئے تھے۔

نیو ساؤتھ ویلز میں اب بھی 79 مقامات پر جنگلوں میں آگ لگی ہوئی ہے جن میں سے 40 قابو سے باہر ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG