رسائی کے لنکس

پاکستان کے صوبہٴ خیبرپختونخوا کے ضلع چارسدہ کے علاقہ مندنی شوڈاگ میں مقامی سکول کے استاد جہانزیب ولد شیر زمان نے مبینہ طور پر سات سالہ بچی آنیسہ دختر جہانگیر سے جنسی زیادتی کی کوشش کی۔ پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے ان کے خلاف مقدمات درج کر دئیے ہیں۔

پولیس کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق، بچی کے والد اور عزیزوں کا تھانہ مندنی میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ انکی سات سالہ بچی شوڈاگ میں کریانے کی دکان سے ٹافیاں لینے گئی تو وہاں کا دکاندار نے، جو قریبی پرائمری سکول میں استاد بھی ہے، بچی کو ورغلا کر اسے سکول لے گیا اور وہاں اس سے جنسی زیادتی کی۔

پولیس نے بچی کو ابتدائی میڈیکل ٹیسٹ کیلئے چارسدہ ہسپتال بھجوا دیا، جہاں، اطلاعات کے مطابق، ’’ریپ ثابت نہ ہوا‘‘۔ تاہم، کم عمر بچی کو سکول کی عمارت میں لے جانے اور جنسی زیادتی کے الزام پر پولیس نے ایف آئی آر درج کر دی ہے۔

اس حوالے سے، ڈی پی او چارسدہ ظہور آفریدی نے بتایا ہے کہ ’’پولیس نے ملزم کے گھر چھاپہ مار کر گورنمنٹ پرائمری سکول کے استاد جہانزیب ولد شیر زمان کو گرفتار کرلیا ہے اور ان کے خلاف سر دست چائلڈ پرو ٹیکشن ایکٹ کے تحت مقدمات درج کئے گئے ہیں‘‘۔

خیال رہے کہ گزشتہ مہینے پنجاب کے ضلع قصور کی زینب نامی بچی کے ساتھ جنسی زیادتی اور قتل کے بعد سے لوگوں کا ایسے واقعات کا پولیس کے پاس رجسٹر کرنے کا رجحان بڑھ رہا ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG