رسائی کے لنکس

logo-print

چین میں فضائی آلودگی کی انتہائی بلند سطح کا انتباہ


فائل فوٹو

اس انتباہ کے تحت اسکول اور کارخانے بند کر دیے گئے ہیں جب کہ  نصف کے قریب گاڑیوں کو سڑکوں پر آنے سے منع کر دیا گیا ہے۔

چین میں فضائی آلودگی پر مشتمل دھند اور گردوغبار کی لہر کے باعث دارالحکومت بیجنگ اور دیگر شمالی شہروں میں ہفتے کو آلودگی کے انتہائی خطرے کا انتباہ جاری کیا گیا ہے۔

اس انتباہ کے تحت اسکول اور کارخانے بند کر دیے گئے ہیں جب کہ نصف کے قریب گاڑیوں کو سڑکوں پر آنے سے منع کر دیا گیا ہے۔

اگرچہ یہ واضح نہیں ہے کہ اس ہنگامی اقدام سے فضائی آلودگی پر کیا اثر پڑے گا تاہم ہفتے کو بیجنگ کی سڑکوں پر گاڑیوں کی تعداد قابل ذکر حد تک کم ہوگئی۔

دوپہر تک دارالحکومت میں دھند اور گردو غبار کی گہری تہہ چھا گئی اور فضا میں آلودہ ذرات کی مقدار اتنی بڑھ گئی کہ عالمی ادارہ صحت کی طرف سے مقرر کی گئی آلودگی کی قابل قبول حد سے 10 گنا زیادہ تک پہنچ گئی۔ اس صورت حال کی وجہ سے لوگوں کے لیے سانس لینا دشوار ہو گیا۔

فضائی آلودگی کے خطرے سے متعلق انتباہ آئندہ بدھ تک کے لیے ہے اور رواں موسم سرما میں ایسا انتباہ پہلی بار جاری کیا گیا ہے۔ یہ اس وقت سامنے آیا ہے جب ملک میں کوئلے سے چلنے والے حرارتی پلانٹ کا استعمال بھی بڑھ گیا ہے۔

چین دنیا میں سب سے زیادہ مضر صحت گیسوں کے اخراج کرنے والے ملکوں میں شامل ہے اور یہاں روایتی طور پر کوئلے سے توانائی حاصل کی جاتی ہے۔

XS
SM
MD
LG