رسائی کے لنکس

logo-print

مرلی دھرن کے لیے وقت کم اور مقابلہ سخت


مرلی دھرن کے لیے وقت کم اور مقابلہ سخت

عالمی کپ کے گروپ میچوں کے دوران سری لنکا کے اسٹار اسپنر مرلی دھرن کے گھٹنے پر چوٹ لگنے اور ران کا پٹھہ کھنچ جانے کی وجہ سے منگل کو نیوزی لینڈ کے خلاف سیمی فائنل میں ان کی شرکت پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا جارہا ہے۔

سری لنکن کپتان کمار سنگاکارانے پیر کو کولمبو میں صحافیوں کو بتایا کہ مرلی اور ہم سب بھرپور کوشش کرہے ہیں کہ وہ اس میچ سے پہلے مکمل طور پر صحت یاب ہوجائیں۔ ”وہ(مرلی) دو چوٹوں کا شکار ہے۔ ممبئی میں (اٹھارہ مارچ کو نیوزی لینڈ کے خلاف گروپ میچ میں)ان کا گھٹنا زمین سے ٹکرایا تھا اور کوارٹر فائنل میں ان کی ران کے ایک متاثرہ پٹھے میں کھچاؤ بھی بڑھ گیاتھا۔ہمیں امید ہے کہ وہ میچ سے پہلے فٹ ہوجائیں گے“۔

38سالہ مرلی دھرن ٹیسٹ میچوں میں آٹھ سو اور ایک روزہ میچوں پانچ سو بتیس وکٹوں کے ساتھ سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے باؤلر ہیں اور اس ورلڈ کپ کے بعد وہ کرکٹ سے ریٹائرہوجائیں گے۔

سنگاکارا کا کہنا تھا ” ہم مرلی کو فائنل میچ کے لیے بچا کر رکھنے کاہرگز نہیں سوچ رہے ہیں۔ کل ایک کانٹے دار مقابلہ ہوگا اور اگر وہ اس میں کھیلتے ہیں تویہ ہمارے لیے زبردست ہوگا۔ لیکن اگر ایسا نہیں ہوتا توبھی ہمارے پاس ایسے کھلاڑی ہیں جو یہ ثابت کرسکیں کہ ہم ایک میچ جیتنے والی ٹیم ہیں“۔

نیوزی لینڈنے گذشتہ جمعہ کو جنوبی افریقہ کو 49رنز سے ہرا کر سیمی فائنل کے لیے کوالی فائی کیا تھا ۔

سری لنکا اور نیوزی لینڈ کے مابین اب تک 73ایک روزہ میچز ہو چکے ہیں جس میں نیوزی لینڈ نے 35اور سری لنکا نے 33جیتے ہیں جب کہ چار بغیر کسی نتیجے کے ختم ہوئے اور ایک میچ برابر رہا۔

یہ دونوں ٹیمیں عالمی کپ مقابلوں میں آٹھ بار مدمقابل آئیں جن میں سے پانچ میں سری لنکا اور تین میں نیوزی لینڈ کو فتح حاصل ہوئی۔ برصغیر میں کھیلے گئے 23میچز میں سری لنکا نے 16میچ جیتے جب کہ نیوزی لینڈ پانچ میچوں میں کامیابی حاصل کرسکا اور دو میچ بے نتیجہ رہے۔

XS
SM
MD
LG