رسائی کے لنکس

logo-print

ہانگ کانگ: میڈیا ٹائیکون جمی لائے متنازع سیکیورٹی قانون کے تحت گرفتار


فائل فوٹو

ہانگ کانگ کی پولیس نے میڈیا ٹائیکون جمی لائے سمیت سات افراد کو نئے سیکیورٹی قانون کے تحت گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس نے پیر کو جمی لائے کے میڈیا گروپ 'نیکسٹ ڈیجیٹل' کے صدر دفتر کا محاصرہ کیا اور عمارت میں داخل ہو کر نیوز روم کی تلاشی لی۔ اس موقع پر پولیس اور سیکیورٹی کے عملے کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی۔

اس سے قبل پولیس اہلکار جمی لائے کی رہائش گاہ پہنچے جہاں مکان کی تلاشی لینے کے بعد اہلکاروں نے انہیں گرفتار کر لیا۔

ہانگ کانگ میں چین کی جانب سے 30 جون کو نافذ کردہ سیکیورٹی قانون کے تحت چین کے زیرِ انتظام اس نیم خود مختار علاقے میں کسی نمایاں شخصیت کو حراست میں لیے جانے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

پولیس نے جمی لائے کی گرفتاری سے 'نیکسٹ ڈیجیٹل' کی عمارت کا محاصرہ بھی کیا۔
پولیس نے جمی لائے کی گرفتاری سے 'نیکسٹ ڈیجیٹل' کی عمارت کا محاصرہ بھی کیا۔

پولیس نے کہا ہے کہ 39 سے 72 برس کے سات افراد کو سیکیورٹی قوانین کی خلاف ورزی پر گرفتار کیا گیا ہے۔ تاہم پولیس نے گرفتار افراد کے نام ظاہر نہیں کیے ہیں۔

متنازع سیکیورٹی قانون کے تحت جمی لائے کی گرفتاری ایسے موقع پر سامنے آئی ہے جب گزشتہ ہفتے ہی امریکہ نے ہانگ کانگ اور چین کے حکام پر پابندیوں کا اعلان کیا تھا۔

جمی لائے کے میڈیا گروپ 'نیکسٹ ڈیجیٹل' کے ایگزیکٹو مارک سمن نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا ہے کہ پولیس نے جمی لائے اور ان کے بیٹے کے گھر کی تلاشی لی۔ ان کے بقول پولیس نے 'نیکسٹ ڈیجیٹل' کے عملے کے کئی ارکان کو بھی حراست میں لیا ہے۔

جمی لائے چین کی حکومت کے کڑے ناقد ہیں اور ماضی میں کئی بار ہانگ کانگ سے متعلق اقدامات پر چین کو تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں۔

ان کا ادارہ 'نیکسٹ ڈیجیٹل' ہانگ کانگ سے ایپل ڈیلی نامی اخبار بھی شائع کرتا ہے۔ یہ اخبار جمہوریت کا حامی ہے جس میں اکثر و بیشتر چین کے ہانگ کانگ میں کردار کو تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ جمی لائے نے گزشتہ برس امریکہ کے نائب صدر مائیک پینس اور وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو سے وائٹ ہاؤس میں ملاقات بھی کی تھی۔ اُس موقع پر انہوں نے ہانگ کانگ کے لیے چین کی متنازع قانون سازی پر تبادلۂ خیال کیا تھا۔

ہانگ کانگ میں رواں سال جون میں نافذ کیے جانے والے نئے سیکیورٹی قانون کے تحت علیحدگی پسندی، تخریب کاری، دہشت گردی یا شہر کے اندرونی معاملات میں کسی دوسرے ملک کے ساتھ گٹھ جوڑ کے الزامات پر ملزم کو گرفتار کیا جا سکتا ہے اور جرم ثابت ہونے پر اس کی زیادہ سے زیادہ سزا عمر قید ہے۔

چین کے سرکاری ٹی وی چینل 'سی سی ٹی وی' کے مطابق گزشتہ ماہ ہانگ کانگ سے تعلق رکھنے والے سیاسی کارکن نیتھن لا اور پانچ دیگر افراد کو اس سیکیورٹی قانون کے تحت گرفتار کیا جانا تھا۔ لیکن تمام چھ افراد بیرونِ ملک فرار ہو گئے تھے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG