رسائی کے لنکس

logo-print

حماس کے راکٹ حملے کے جواب میں اسرائیلی طیاروں کی بمباری


غزہ میں حماس کی ایک تنصیب اسرائیلی حملے میں تباہ

اسرائیلی عہدے داروں نے کہاہے کہ غزہ کے فلسطینی عسکریت پسندوں نے ہفتے کے روز جنوبی اسرائیل پر 50 سے زیادہ راکٹ فائر کیے، جو کئی مہینوں کے دوران کیا جانے والا سب سے بڑا حملہ تھا۔

اسرائیل نے حماس پر راکٹ داغنے کا الزام لگایا اور اس کا جواب حماس کے زیر قبضہ غزہ کی پٹی پر فضائی حملوں کی شکل میں دیا۔ عسکریت پسند تنظیم نے کہاہے کہ وہ ان میں کچھ گولے پھینکنے کی ذمہ دار ہے۔

اسرائیلی اور فلسطینی عہدے داروں کا کہناہے کہ ان حملوں میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ اسرائیل کے وزیر خارجہ لائبرمین نے کہاہے کہ انہوں نے اقوام متحدہ سے غزہ کی جانب سے حملوں کی شکایت کردی ہے۔

ہفتے کے واقعہ اسرائیل جنگی طیاروں کی جانب سے غزہ میں واقع حماس کی ایک سیکیورٹی تنصیب پر بمباری کے تین روز بعد پیش آیا ہے۔ اسرائیلی حملے میں حماس کے دو ارکان ہلاک اور چار زخمی ہوگئے تھے۔

اسرائیل کا کہناہے کہ اس نے اس سے قبل غزہ سے کی جانے والی گولا باری کے جواب میں بدھ کے روز فضائی حملہ کیاتھا۔

XS
SM
MD
LG