رسائی کے لنکس

logo-print

المبحوح قتل میں الموساد کا ملوث ہونا ثابت نہیں ہوا


اسرائیلی وزیرخارجہ نے نہ اس کی تردید کی ہے نہ تائید

اسرائیل کے وزیر خارجہ نے بدھ کے روز کہا کہ یہ سوچنے کی کوئی وجہ نہیں ہے کہ دبئی میں حماس کے ایک سینئر لیڈر کے قتل کے پیچھے اسرائیلی خفیہ ایجنسی الموساد کا ہاتھ ہے۔

وزیر خارجہ ایوِگڈور لیبرمین نے اس کی تصدیق یا تردید نہیں کی کہ محمود المبحوح کے پچھلے ماہ ایک پرتعیش ہوٹل میں پر اسرار قتل میں ایجنسی ملوث ہے۔

اس قتل میں اسرائیل کے ممکنہ تعلق کا دعویٰ اس وقت سامنے آیا جب دبئی پولیس نے گیارہ مشتبہ افراد کو گرفتار کیا جن کے پاس یورپی پاسپورٹ ہیں۔ اس کے بعد سے یہ باور کیا گیا ہے کہ ان میں سات کے پاس اسرائیل کی شہریت بھی ہے اور ان میں کئی ایک کی شناختیں اصل نہیں ہیں بلکہ چرائی ہوئی ہیں۔

پولیس نے کہا ہے کہ ان مشتبہ افراد میں جرمنی اور فرانس سے ایک ایک تین آئرلینڈ اور چھ برطانیہ سے ہیں۔

دبئی پولیس نے بتایا کہ ان مشتبہ افراد نے ہوٹل میں مسٹر المبحوح کے سامنے والا کمرہ کرایہ پر لیا تاکہ ان کی نقل و حرکت پر نظر رکھ سکیں اور انہیں قتل کرنے کے فوراً بعد یہ سب ملک سے فرار ہو گئے۔

XS
SM
MD
LG