رسائی کے لنکس

جاپان کی ائیر سیلف ڈیفنس فورس یعنی 'اے ایس ڈی ایف' کا کہنا ہے کہ جاپانی ایف۔15 لڑاکا طیاروں نے ہفتہ کو امریکہ کے بی ون بی بمبار طیاروں کے ساتھ مل کر مشرقی بحیرہ چین کے اوپر فضائی مشقیں کی ہیں۔

امریکہ اور جاپان کی یہ مشترکہ فضائی مشقیں ایک ایسے وقت ہوئی ہیں جب جنوبی کوریا کو شمالی کوریا کی طرف سے اس کے یوم تاسیس کے موقع پر مزید میزائل تجربات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

واضح رہے کہ شمالی کوریا نے چند دن پہلے اپنے چھٹا اور سب سے بڑا جوہری تجربہ کیا جس کی وجہ سے عالمی تجارتی منڈیوں کو دھچکا لگا اور خطے میں کشیدگی میں مزید اضافہ ہو گیا۔

بتایا گیا ہے کہ ان فضائی مشقوں میں حصہ لینے والے امریکہ کے دو بی ون بی لانسر بمبار طیاروں نے بحر الکاہل میں واقع امریکی جزیرے گوام کے فضائی اڈے سے پرواز کی اور بعد ازاں دو جاپانی ایف۔15 لڑاکا طیارے بھی ان کے ساتھ شامل ہو گئے۔

واضح رہے کہ 31 اگست کو شمالی کوریا کی طرف سے شمالی جاپان کے اوپر میزائل داغے جانے کے دو دن کے بعدجاپان کے ایف۔15 لڑاکا طیاروں نے امریکہ کے بی ون بی بمبار اور ریڈار پر نظر نا آنے والے ایف۔35 لڑاکا طیاروں کے ساتھ جزیرہ نما کوریا کی جنوبی فضاؤں میں فضائی مشقیں کیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG