رسائی کے لنکس

پاکستان عالمی عدالت میں کلبھوشن پر اپنا جواب دسمبر میں جمع کرائے گا


پاکستانی فوج کے ترجمان میڈیا کو گرفتار کیے گئے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کی سرگرمیوں کے متعلق تصاویر کی مدد سے بتا رہے ہیں۔ اپریل 2017

پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے الزام میں پاکستان میں گرفتار بھارتی جاسوس کلبھرشن یادیو پر بھارت نے اپنا جواب عالمی عدالت انصاف مٰیں جمع کرا دیا ہے جب کہ پاکستان کے پاس 13 دسبمرتک مہلت موجود ہے۔

مبینہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے متعلق پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ کلبھوشن یادیو کے معاملے پر بھارت نے اپنا جواب عالمی عدالت انصاف میں جمع کرادیا ہے۔

ترجمان کے بقول بھارت ایک جاسوس کے معاملے کو انسانی ہمددردی کا رنگ دینا چاہتا ہے۔ کلبھوشن نے پاکستان میں دہشت گردانہ کارروئیاں کی۔ اس کیس میں پاکستان عالمی عدالت انصاف میں اپنا جواب 13 دسمبر کو جمع کرائے گا۔

دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان نفیس زکریا نے کہا کہ وزیر خارجہ خواجہ آصف کے غیر ملکی دوروں میں دوست ممالک نے یہ تسلیم کیا کہ إلزام تراشیوں سے افغانستان میں امن قائم نہیں ہو سکتا۔

نفیس زکریا کا کہنا تھا کہ پاکستان ہر اس اقدام کی حمایت کرتا ہے جس سے افغانستان میں امن اور استحكام آ سکے۔ افغانستان میں قیام امن کے لیے بہت سے اقدامات کیے جارہے ہیں۔ تاہم اس بات کو چین، ایران اور ترکی نے بھی تسلیم کیا کہ إلزام تراشی سے افغانستان میں امن قائم نہیں ہو سکتا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر خارجہ کے دوروں میں تمام ممالک کے ساتھ میانمار میں روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کی مذمت بھی کی گئی جبکہ معاملے پر پاکستان کے موقف کو سراہا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں 60 ہزار سے زیادہ جانیں قربان کیں۔ خواجہ آصف کے دوروں میں تینوں ممالک نے پاکستان کی ان قربانیوں کو تسلیم کیا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر خارجہ اور وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران ان کی امریکی انتظامیہ کے ساتھ ملاقاتوں کے امکان کا فی الحال علم نہیں، تاہم خواجہ آصف اجلاس کی سائیڈ لائنز پر افغان ہم منصب سے ملاقات کریں گے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت علاقائی امن کے حوالے سے کبھی بھی سنجیدہ نہیں رہا۔ یہ بھارت ہی تھا جس نے آخری لمحات میں تمام مسائل پر بات چیت کو روک دیا۔ بھارت اور امریکہ کے درمیان ہتھیاروں کی خرید وفروخت خطے کو غیر مستحکم کر رہی ہے جبکہ احسان اللہ احسان، کلبھوشن یادیو اور چک ہیگل کے بیانات سے ظاہر ہے کہ بھارت، افغانستان کے ذریعے پاکستان کو نقصان پہنچا رہا ہے۔

لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر مبینہ بھارتی جارحیت کے حوالے سے ترجمان کا کہنا تھا کہ بھارت نے ایل او سی پر گذشتہ ایک سال میں 700 سے زائد بار سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیاں کیں۔ 2016 میں یہ تعداد 370 تھی تاہم ہماری مسلح افواج بھرپور انداز میں بھارتی اشتعال انگیزی کا جواب دیتی ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG