رسائی کے لنکس

logo-print

پولیس نے 29 سالہ سوڈانی نژاد صالح پر لندن کار حملہ کا الزام عائد کر دیا


پولیس اس مقام سے شواہد اکھٹے کر رہی ہے جہاں کار کو ٹکرایا گیا تھا۔ 14 اگست 2018

برطانیہ کی انسداد دہشت گردی پولیس نے 29 سالہ سوڈانی نژاد شخص کے متعلق یہ جاننے کی کوشش میں کئی مقامات کی تلاشي لی کہ آیا پارلیمنٹ کے قریب کار ٹکرانے کے واقعہ کو دہشت گردی کا عمل قرار دیا جا سکتا ہے۔

صالح خطر سوڈان میں پیدا ہونے والا ایک برطانوی شہری ہے ۔ اسے منگل کے روز کار ٹکرانے کے مقام سے گرفتار کیا گیا تھا۔

برطانوی حکام نے اس کا نام الزام عائد کیے جانے تک ظاہر نہیں کیا۔

اسے دہشت گردی کی تیاری کے شبے میں حراست میں لیا گیا ہے اور اس پر قتل کی کوشش کا بھی الزام لگایا گیا ہے۔

پولیس نے بدھ کے روز کہا کہ تفتیش کاروں کی ترجیج بدستور یہ ہے کہ تین افراد کو زخمی کرنے کے واقعہ کا اصل محرک کیا ہے۔

کار ٹکرانے سے زخمی ہونے والے دو افراد کو اسپتال لے جایا گیا تھا جنہیں اب وہاں سے چھٹی مل گئی ہے۔

عہدے داروں نے سینٹرل انگلینڈ کے دو علاقوں کی جانچ پڑتال مکمل کر لی ہے جن میں برمنگھم بھی شامل ہے جہاں کے ایک اپارٹمنٹ میں خطر رہتا تھا۔ جب کہ دوسرا علاقہ نوٹنگھم ہے۔

بدھ کے روز لندن سے 160 کلومیٹر شمال مغرب میں واقع ایک اور مقام پر چھاپہ مارا ۔

پچھلے سال ایک شخص نے ویسٹ منسٹر پل کے قریب پیدل چلنے والوں پر اپنی کار چڑھا دی تھی جس سے چار افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ اس کے بعد حملہ آور نے پارلیمنٹ کے باہر ایک پولیس اہل کار کو چاقو کے وار کر کے قتل کر دیا تھا۔

پولیس نے حملہ آور کو گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG