رسائی کے لنکس

logo-print

مرکل یورپی یونین سے برطانیہ کی علیحدگی پر مقررہ مذاکرات کی خواہاں


آنگیلا مرکل میکسیکو میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے

جرمنی کی چانسلر آنگیلا مرکل نے کہا ہے کہ برطانیہ میں ہونے والے انتخابات کے نتائج کے تناظر میں ان کا خیال ہے کہ برطانیہ یورپی یونین سے علیحدہ ہونے کے اپنے منصوبے پر ثابت قدم رہے گا۔

جمعہ کو میکسیکو سٹی کے دورے کے دوران مرکل کا کہنا تھا کہ وہ چاہتی ہیں کہ برطانیہ کی یونین سے علیحدگی کے مذاکرات کے لیے جلد کام شروع ہو۔

برطانوی عام انتخابات میں وزیراعظم تھریسا مے کی کنزرویٹو جماعت سادہ اکثریت حاصل کرنے میں کامیاب تو نہیں ہوئی لیکن وہ ڈیموکریٹک یونینسٹ کے ساتھ مل کر حکومت بنانے جا رہی ہے۔

مے یہ کہہ چکی ہے کہ یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے بات چیت کا آغاز 19 جون کو طے ہے لیکن ان کے لیے ایسے خدشات میں اضافہ ہوا ہے کہ حزب مخالف کی طرف سے مے کو مزید مخالفت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

میکسیکو کے صدر اینرک پینا نیئٹو کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مرکل کا کہنا تھا کہ "میرا خیال ہے کہ برطانیہ، جو میں نے آج وزیراعظم سے سنا ہے، مذاکرات کے منصوبے پر ثابت قدم رہے گا۔"

ان کا مزید کہنا تھا کہ "ہم جلد مذاکرات کرنا چاہتے ہیں، ہم اس منصوبے پر کاربند ہونا چاہتے ہیں، اور اس وقت میرا نہیں خیال کہ کوئی ایسی بات ہو جس سے یہ کہا جا سکے کہ اس منصوبے پر عمل نہیں کیا جا سکتا جس پر ہم سب نے اتفاق کیا تھا۔"

یورپی یونین کے راہنماؤں کی طرف سے بھی ایسے تحفظات سامنے آ چکے ہیں کہ مے کی طرف سے پارلیمان میں اکثریت کھو دینے سے مذاکراتی عمل کی ناکامی کے لیے خطرات بڑھ سکتے ہیں جس سے یہ لوگوں اور کاروبار کے لیے ایک قانونی تعطل پیدا ہو سکتا ہے۔"

مرکل کا کہنا تھا کہ برطانیہ 'بریگزٹ' کے باوجود یورپ کا حصہ ہے اور وہ چاہتی ہیں کہ یہ ملک ایک شراکت دار بنا رہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG