رسائی کے لنکس

logo-print

کرم ایجنسی میں مسافر گاڑی پر دہشت گردحملے میں 13 افراد ہلاک


پاڑہ چنار اور پشاور کے درمیان سفر کرنے والے شیعہ برادری کے افراد کے تحفظ کے لیے خصوصی انتظامات بھی کیے گئے ہیں لیکن امن معاہدے کے بعد اہل تشیع کی گاڑیوں پرتین حملوں میں 29 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو چکے ہیں۔

پشاور اور قبائلی علاقے کرم ایجنسی کے مرکزی قصبے پاڑہ چنار کے درمیان سفر کرنے والی مسافر گاڑیوں پر نامعلوم شدت پسندوں کی فائرنگ سے کم ازکم 13 افرا د ہلاک ہو گئے۔ مقامی عہدیداروں کے مطابق یہ حملہ ہنگو کے قریب نیم قبائلی علاقے میں بگن کے مقام پر ہوا ۔

حکام اور مقامی قبائلیوں کے مطابق مسلح حملہ آوروں نے مسافروں سے بھری ایک گاڑی کو اغواء بھی کرلیا ہے ۔ ہنگوسے ملحقہ قبائلی علاقے کرم ایجنسی سے تعلق رکھنے والے اقلیتی شیعہ برادری کے لیے پشاور اور پاڑہ چنار کو ملانے والی مرکزی شاہراہ پر آمد ورفت تقریباً تین سال تک معطل رہی ۔ اس سال جنوری کے اواخر میں ایک امن معاہدے کے بعد اس سڑک کو ٹریفک کے لیے دوبارہ کھولا گیا۔

پاڑہ چنار اور پشاور کے درمیان سفر کرنے والے شیعہ برادری کے افراد کے تحفظ کے لیے خصوصی انتظامات بھی کیے گئے ہیں لیکن امن معاہدے کے بعد اہل تشیع کی گاڑیوں پرتین حملوں میں 29 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو چکے ہیں۔

ان حملوں سے جنوری میں ہونے والے امن معاہدے کا وجود بظاہر خطرے میں پڑ گیا ہے ۔ ایک روز قبل اسی شاہراہ پر ہنگو ضلع کے علاقے دوآبہ میں تھانے پر خودکش حملے میں آٹھ افراد ہلاک اور دو درجن سے زائد زخمی ہو ئے تھے۔

XS
SM
MD
LG