رسائی کے لنکس

پاکستان کا فلسطینی سفیر کی ریلی میں شرکت کا 'دفاع'


پاکستان کے دفترِ خارجہ کے مطابق اس ریلی سے حافظ سعید سمیت 50 سے زائد افراد نے خطاب کیا تھا۔

پاکستان میں کالعدم تنظیم جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ سعید کے ساتھ ایک ریلی میں شرکت کرنے پر بھارت کے شدید ردِعمل کے جواب میں فلسطین کی طرف سے اسلام آباد میں متعین اپنے سفیر کو واپس بلائے جانے پر پاکستان کا کہنا ہے کہ اقوامِ متحدہ کی جانب سے جماعت الدعوۃ پر عائد پابندی، اظہارِ رائے پر قدغن نہیں لگاتی۔

امریکہ، بھارت اور اقوامِ متحدہ جماعت الدعوۃ کو دہشت گرد تنظیم قرار دیتے ہیں جب کہ واشنگٹن اور نئی دہلی حافظ سعید پر ممبئی میں 2008ء کے دہشت گرد حملوں میں ملوث ہونے کا الزام بھی عائد کرتے ہیں۔

جمعے کو راولپنڈی میں فلسطین کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے نکالی گئی ایک ریلی میں حافظ سعید نے بھی شرکت کی تھی اور اسی میں پاکستان میں فلسطین کے سفیر ولید ابو علی بھی ان کے ہمراہ اسٹیج پر موجود تھے۔

بھارت کی طرف سے اس پر شدید ردِعمل سامنے آیا تھا اور اس کی وزارتِ خارجہ نے ایک بیان میں کہا تھا کہ نئی دہلی نے فلسطین سے اظہار ناراضی کرتے ہوئے "ایک دہشت گرد کے ساتھ فلسطین کے سفیر کی موجود کو ناقابلِ قبول قرار دیا ہے۔"

جواباً فلسطین نے بھارت کے ساتھ اپنے قریبی تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کے سفیر کی ایسے افراد کے ساتھ موجودگی جن پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام ہو، نادانستہ غلطی لیکن ناقابلِ وضاحت ہے۔

پیر کو پاکستان کے دفترِ خارجہ سے جاری ایک بیان میں ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے فلسطین کے سفیر کی فلسطینیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے نکالی جانے والی ریلی میں شرکت کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ یروشلم سے متعلق امریکی فیصلے کے خلاف کئی ریلیاں نکالی گئیں جن میں فلسطینی سفیر بھی شریک ہوئے۔

ترجمان کے مطابق اس ریلی سے حافظ سعید سمیت 50 سے زائد افراد نے خطاب کیا تھا۔

ان کے بقول "(اس ضمن میں) پیدا کیے جانے والے تاثر کے برعکس اقوامِ متحدہ کی جانب سے عائد پابندی اظہارِ رائے کی آزادی پر قدغن نہیں لگاتی۔"

ترجمان نے مسئلۂ فلسطین کے متعلق پاکستان کے موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہمیشہ یروشلم کو فلسطینی ریاست کا دارالحکومت سمجھتے ہوئے دو ریاستی حل کی حمایت کرتا آیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ پاکستان کی حکومت اور عوام فلسطینی سفیر کی طرف سے فلسطینیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے منعقدہ پروگرامز میں بھرپور شرکت کا احترام کرتے ہیں۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG